The news is by your side.

اے جذبۂ دل گر میں چاہوں: ضعیف العمر تیراک نے عالمی ریکارڈ توڑ دیا

کینبرا: ننانوے سالہ شخص نے تیراکی کے مقابلے میں مقررہ فاصلہ طے کر کے ماضی میں بنایا گیا عالمی ریکارڈ توڑ دیا۔

تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والے 99 سالہ تیراک ’جُارج کرونز‘ نے عالمی ریکارڈ بنا کر یہ ثابت کر دیا کہ شوق کا کوئی مول نہیں ہوتا، اگر ثابت قدم رہا جائے تو عمر کی قید آپ کی ہمت، لگن اور حوصلوں کو کبھی شکست نہیں دے سکتی۔

ایسے ہی مناظر آسٹریلیا کی ریاست کوئنز لینڈ میں دیکھنے میں آئے، جہاں سوئمنگ مقابلہ منعقد کیا گیا جس میں خاص طور پر حصہ لینے والے تیراک بازوں کی عمر 100-104 کے درمیان مقرر کی گئی ہے۔ اس مقابلے میں جُارج کرونز کی برق رفتاری نے سب کو حیران کر دیا۔

جھیل میں تیراکی کا انوکھا ریکارڈ

آسٹریلیا میں جاری مقابلے میں جُارج کرونز نے پچاس میٹر کا فاصلہ صرف 56.12 سیکنڈز میں طے کیا جس کے بعد 2014 میں برطانوی تیراک کا بنایا گیا عالمی ریکارڈ ٹوٹ گیا۔

برطانوی نشریاتی ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے جُارج کرونز نے کہا کہ یہ جیت میرے لیے مثالی ہے، میں نے تہیہ کر لیا تھا کہ مجھے مقابلہ جیتنا ہے جس کے لیے میں نے خوب محنت کی اور بلآخر جیت مقدر بنی۔

انہوں نے کہ میں اپنے لڑکپن اور جوانی کے ادوار میں فٹنس کے طور پر تیراکی کرتا تھا، لیکن پھر اچانک میں نے سوئمنگ چھوڑ دی لیکن 80 سال کی عمر سے دوبارہ سوئمنگ شروع کی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ میرا یہ خواب تھا کہ میں عالمی ریکارڈ توڑوں، میری زندگی میں کبھی طویل العمری رکاوٹ نہیں بنی اور میں اپنے آپ کو بہت فٹ محسوس کرتا ہوں، اب بھی مجھ میں صلاحیت موجود ہے، مستقبل میں مزید بڑے ریکارڈ بنانے کے لیے پر امید ہوں۔

سوئٹزر لینڈ: مسلمان لڑکیوں کو لڑکوں کے ساتھ تیراکی کا حکم

دوسری جانب ماسٹر سوئمنگ آسٹریلیا(ایم ایس اے) کا کہنا ہے کہ عالمی ادارہ سوئمنگ کی جانب سے تصدیق کے بعد عالمی ریکارڈ کے توٹنے کا باقائدہ اعلان کیا جائے گا۔

خیال رہے اس سے قبل عالمی ریکارڈ سال 2014 میں برطانوی تیراک ’جون ہیریسن‘ کی جانب سے بنایا گیا تھا جنہوں نے مقررہ 50 میٹر کا فاصلہ ایک منٹ 31.19 سیکنڈز میں طے کیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں