The news is by your side.

Advertisement

حمل کے دوران چائے کا استعمال خطرناک قرار

دبلن: طبی ماہرین نے خواتین کو خبردار کیا ہے کہ وہ حمل کے دوران چائے یا کافی کا زیادہ استعمال نہ کریں کیونکہ اس کی وجہ سے پیدا ہونے والا بچہ کمزور ہوجاتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آئرلینڈ کے ڈبلن میڈیکل کالج یونیورسٹی میں تحقیقاتی مطالعے کا انعقاد کیا گیا جس میں بچوں کے پیدائشی طور پر کمزور ہونے کی وجوہات جاننے کی کوشش کی گئی۔

ماہرین کے مطابق حاملہ خواتین کے دن میں تین بار چائے یا دو کپ کافی پینے سے بچوں کی قبل از وقت پیدائش کا خطرہ حد سے زیادہ بڑھ جاتا ہے۔

مزید پڑھیں: حاملہ خواتین کا ڈانس سے علاج کرنے والا ڈاکٹر

تحقیقاتی ماہرین کا کہنا ہے کہ چائے یا کافی میں موجود کیفین خون کی روانی کو متاثر کرتی ہے، اسی رکاوٹ کی وجہ سے بچے کی نشوونما متاثر ہوتی ہے اور اُس کا وزن بھی کم رہ جاتا ہے۔

تحقیق میں ایک ہزار سے زائد ایسی خواتین کا ڈیٹا جمع کیا گیا جن کے ہاں بچوں کی پیدائش ہوچکی ہے۔

مطالعے کے نتیجے میں سامنے آنے والے نتائج کے مطابق 100 ملی گرام سے زائد کیفین حمل کے ابتدائی تین ماہ میں بچے کے وزن کو کم کر دیتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: حاملہ خواتین کی طبی حفاظت کے لیے اسمارٹ کنگن تیار

ماہرین کے مطابق اگر ابتدائی تین ماہ میں مقررہ مقدار سے 100 ملی گرام زائد کیفین استعمال کی جائے تو بچے کا وزن 72 گرام تک کم ہوجاتا ہے، اسی وجہ سے اُس کا قد اور سر کی گولائی بھی کم ہوجاتی ہے۔

ڈاکٹرز نے حاملہ خواتین کو متنبہ کیا ہے کہ زیادہ کیفین استعمال کرنے سے بچے کا وزن 170 گرام تک رہ سکتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں