The news is by your side.

Advertisement

موٹاپے نے ماں کو بچوں سے جُدا کردیا، انوکھا مقدمہ

لندن : برطانیہ میں اپنی نوعیت کے انوکھے مقدمے کی سماعت ہوئی جس میں عدالت نے قرار دیا کہ بچوں کو موٹاپے سے نجات نہ دلانے کی پاداش ماں کے دونوں بچے دارالامان میں رہیں گے۔

برطانیہ میں موٹاپے کا شکار ہونے کی وجہ سے نوجوان بہن بھائی کو حکومت نے ماں سے چھین کر اپنی تحویل میں لے لیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق 17سال بھائی اور اس کی 13سالہ بہن ماں کے ساتھ رہتے ہوئے اپنا موٹاپا کم کرنے میں ناکام رہے جس پر حکام نے عدالت سے رجوع کر لیا۔

فیملی کورٹ کی جج جیلیان ایلس کا کہنا تھا کہ ماں کی طرف سے ان بچوں پر خاطرخواہ توجہ نہ دیا جانا ثابت ہو چکا ہے، یہی وجہ تھی کہ دونوں بچے سوشل ورکرز کی طرف سے جم کی ممبر شپس اور دیگر ضروری مدد فراہم کرنے کے باوجود ماں کے ساتھ رہتے ہوئے موٹاپا کم کرنے میں ناکام رہے۔

جج نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ بچوں کا موٹاپا مسلسل بڑھنے کی وجہ سے ان کی صحت کو سنگین خطرات لاحق ہوسکتے ہیں چنانچہ انہیں ایک فوسٹر فیملی کے ساتھ رکھا جائے جہاں ان کی مناسب دیکھ بھال ہوں اور ان کی صحت کے حوالے سے ضروریات پوری ہو سکیں۔

واضح رہے کہ یہ اپنی نوعیت کا پہلا عدالتی فیصلہ ہے جو منظرعام پر لایا گیا ہے۔ مقدمے کی سماعت کے بعد عدالت نے مذکورہ دونوں بچوں کو ان کی والدہ سے لے کر فوسٹر کیئر میں رکھنے کا فیصلہ سنا دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں