The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: 20 سال قبل اغوا ہونے والے بچوں کا معاملہ الجھ گیا

ریاض: سعودی عرب میں 20 سال قبل اغوا ہونے والے بچوں کے معاملے کی گتھی تاحال نہ سلجھ سکی۔

عرب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں بچوں کے اغوا سے متعلق یہ منفرد واقعہ ہے۔ اغوا ہونے کے بیس سال بعد منظر عام پر آنے والے بچوں کے اصل والدین کا پتا لگانے میں پولیس تاحال ناکام ہے۔

اغوا ہونے والے ایک بچے کے دعویدار باپ کا کہنا ہے کہ پولیس نے ڈی این اے ٹیسٹ کے نمونے حاصل کرلیے ہیں، جلد انہیں بھی یقین آجائے گا یہ میرا ہی بیٹا ہے، ہمارا حقیقی بیٹا جلد اصل گھر کے دسترخوان پر ہمارے ساتھ ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ حال ہی گرفتار ہونے والی عورت نے میرے بچے کو 20 برس قبل اسپتال سے اغوا کیا تھا، اسپتال کے کلوز سرکٹ کیمروں سے حاصل ہونے والی فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ایک عورت میرے بچے کو اپنے ساتھ لے جا رہی ہے۔

سعودی عرب: جج کے اغوا میں ملوث 3 افراد گرفتار

خیال رہے کہ سعودی عرب کے مشرقی ریجن کے علاقے دمام میں ایک خاتون نے دو بچوں کی 20 برس تک پرورش کی۔ جب شناختی کارڈ بنوانے کے لیے دستاویزات طلب کی گئی تو وہ خاتون کے پاس نہیں تھیں جس کے بعد حقیقت سامنے آگئی جبکہ خاتون نے بچوں کی والدہ نہ وانے کا بھی اعتراف کیا۔

گرفتار خاتون کا کہنا تھا کہ انہیں یہ بچے کہیں پڑے ملے تھا تو اس نے اٹھا کر پولیس کے مطلع کیے بغیر ان کی پرورش شروع کردی۔ خیال رہے کہ مذکوہ خاتون کے پاس ایک اور بچہ بھی موجود ہے پولیس نے اس سے متعلق بھی تحقیقات شروع کردی ہے۔ پولیس کو شبہ ہے کہ یہ بچہ بھی اغوا شدہ ہوسکتا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں