The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں یکم جنوری 2020 سے یہ قوانین نافذ العمل ہوں گے

ریاض : سعودی حکام کی جانب سے رواں برس متعدد اصلاحاتی منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھا گیا جبکہ کئی قوانین اور قراردادیں بھی جاری کی گئی تھی جن پر عمل درآمد 1 جنوری 2020 سے ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے وژن 2030 کے تحت ریاست میں متعدد نئے قوانین، قراردادیں اور ضوابط جاری کیے گئے تھے تاکہ عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں فراہم کی جاسکیں اور اصلاحاتی منصوبوں کو بھی جلد از جلد تکمیل تک پہنچایا جاسکے۔

سعودی عرب میں یکم جنوری 2020 سے جو قوانین اور قرارداریں نافذ العمل ہوں گی وہ مندرجہ ذیل ہیں۔

اقامہ پر میڈیکل سہولت

ہیلتھ انشورنس کونسل کے سیکریٹری جنرل شباب الغامدی کے مطابق یکم جنوری 2020 سے اسپتالوں اور ہیلتھ سینٹرز میں علاج اور طبی معائنے کے لیے جانے والوں کو ہیلتھ انشورنس کارڈ دکھانے کی ضرورت نہیں رہے گی، وہ اپنا شناختی کارڈ (اقامہ) دکھا کر ہیلتھ انشورنس حاصل کرسکیں گے۔

مقامی میڈیا کے مطابق یہ ضابطہ سعودی شہریوں پر بھی لاگوں ہوگا۔

پرندوں کی درآمدکے لیے شرائط

وزارت ماحولیات و پانی و زراعت کی مقررہ کردہ شرائط کے مطابق آئندہ برس 1 جنوری سے سعودی شہری دمام کے کنگ فہد ایئرپورٹ، القصیم کے امیر نایف انٹرنیشنل ایئرپورٹ اور مدینہ منورہ کے امیر محمد بن عبدالعزیز انٹرنیشنل ایئرپورٹ ہی سے مرغیاں اور آرائشی پرندے لاسکیں گے، ان تین ہوائی اڈوں کے سوا کسی بھی ایئرپورٹ سے پرندے لانے کی اجازت نہیں ہوگی۔

تجارتی مراکز چوبیس گھنٹے کھلیں گے

سعودی حکام نے رواں برس تجارتی مراکز کو شرائط پوری کرنے پر 24 گھنٹے کھلنے رکھنے کی اجازت دی تھی جس پر عمل درآمد یکم جنوری سے ہوگا۔

نائٹ ڈیوٹی

سعودی وزیر محنت و سماجی بہبود کی جانب سے فیصلہ کیا گیا تھا کہ یکم جنوری 2020 سے رات 11 سے صبح 6 بجے تک نائٹ ڈیوٹی شمار ہوگی اور ادارے پر نائٹ ڈیوٹی کرنے والے ملازمین کے خصوصی حقوق ہوں گے۔

صنعتی کارکنوں پر فیس کی معافی

وزارت محنت و سماجی بہبود نے سعودی کابینہ کے فیصلے کے تحت اعلان کیا تھا کہ یکم جنوری 2020 سے سعودی سرکار ہی صنعتی اداروں میں کام کرنے والے غیر ملکی کارکنان پر مقررہ فیس ادا کرے گی۔

یہ فیصلہ ان صنعتی اداروں کے کارکنان پر نافذ ہوگا جن کے لائسنس وزرات صنعت و معدنیات نے جاری کیے ہوں گے، یہ سہولت 5برس تک کے لیے ہوگی۔

مخصوص کوکنگ آئل پر پابندی

وزارت صحت نے ملک میں امراض قلب کی بڑھتی ہوئی شکایات کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے رواں برس فیصلہ کیا ہے کہ آئندہ سال 2020 یکم جنوری سے کھانا پکانے کے تیل کی خریدو فروخت پر پابندی عائد کی جائے گی، پابندی کا اطلاق اس کوکنگ آئل پر ہوگا جس کو بناتے وقت اسے ہائیڈروجن کے عمل سے گزارا گیا ہوگا۔

زکوٰة کا نیا لائحہ عمل

محکمہ زکوٰة و آمدنی نے واضح کیا تھا کہ زکوٰة کا نیا لائحہ عمل غیر ملکی سرمایہ کاروں پر لاگو نہیں ہوگا، یہ صرف سعودی شہریو ںاور مملکت میں مقیم خلیجی باشندوں پر یکم جنوری 2020 سے نافذ ہوگا۔

غیر ملکی سرمایہ کار سے انکم ٹیکس کی وصولی پر ہی اکتفا کیا جائے گا۔

ٹیکسی سروس کی سعودائزیشن

یکم جنوری 2020 سے ’ الاجرة الخاصة ‘(ٹیکسی سروس) کے تمام ڈرائیور سعودی ہوں گے۔

پبلک ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے وزارت محنت و سماجی بہبود کے ساتھ اتفاق پیدا کرکے اعلان کیا تھا کہ ’الاجرة الخاصة‘ (ٹیکسی سروس) میں کام کرنے والے غیر ملکیوں کو 2019 کے اختتام تک رعایت دے دی جائے۔

لیب ایکسپرٹ کا پیشہ

سعودی ہیلتھ اسپشلائزیشن بورڈ نے فیصلہ کیا تھا کہ یکم جنوری 2020 سے لیب ایکسپرٹ کا پیشہ سعودیوں کے لیے مختص ہوگا، کسی غیر ملکی کو اس پیشے پر کام کی اجازت نہیں ہوگی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں