The news is by your side.

Advertisement

سعودی حکومت نے ملازمین کی مشکل آسان کردی

ریاض: سعودی وزارت افرادی قوت وسماجی بہبود نے ملازمین کی پریشانی دور کردی۔

عرب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق وزارت افرادی قوت نے وضاحت پیش کی کہ نئے نظام سے قبل جاری ہونے والے ’کاغذی ‘ معاہدے منسوخ نہیں ہوئے ہیں۔

رپورٹ میں بتایا کہ سعودی عرب میں افواہیں گردش کررہی تھیں کہ یکم جنوری سے ملازمت کے پرانے معاہدے وزارت افرادی قوت میں قبول نہیں کیے جائیں گے نہ ہی ان معاہدوں کی بنیاد پر لیبرکورٹ میں مقدمہ درائر کیا جاسکے گا۔

سعودی وزارت افرادی قوت وسماجی بہبود نے من گھڑت باتوں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ پرانے معاہدوں کے حوالے سے وزارت کی جانب سے ایسا کوئی بیان جاری نہیں ہوا۔

یہ بھی وضاحت کی گئی کہ معاہدے منسوخ کرنے اور انہیں قبول نہ کرنے کی کوئی بات کی گئی ہے۔

ترجمان وزارت افرادی قوت سعد آل حماد کا کہنا ہے کہ وزارت کی جانب سے ایسی کوئی بات نہیں کی گئی، معاہدوں کی ڈیجیٹل تصدیق کا مقصد آجر و اجیر کے حقوق کا تحفظ ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ڈیجیٹل ملازمت کے معاہدوں کے حوالے سے وہی پالیسی جاری ہے جس کا اعلان ماضی میں کیاجاچکا ہے تاہم ذرائع ابلاغ کو چاہیے کہ وہ درست ذریعے سے معلومات قارئین تک منتقل کریں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں