The news is by your side.

Advertisement

برطانوی وزیراعظم کی بریگزٹ ڈیل کا مسودہ پارلیمنٹ سے تیسری بار مسترد

لندن: برطانوی وزیراعظم کی مشکلات کم نہ ہوسکیں، تھریسامے کی بریگزٹ ڈیل کا مسودہ پارلیمنٹ سے تیسری بار مسترد ہوگیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق برطانوی وزیراعظم تھریسامے کی بریگزٹ ڈیل کا مسودہ پارلیمنٹ سے تیسری بار مسترد ہوگیا، مسودے کے حق میں 286 اور مخالفت میں 344 ووٹ ڈالے گئے۔

پارلیمنٹ سے تھریسامے کی تیسری بار ناکامی پر اپوزیشن لیڈر جیرمی کوربن نے برطانوی وزیراعظم سے فوری مستعفی ہونے کا مطالبہ کردیا۔

اپوزیشن لیڈر جیرمی کوربن نے پارلیمنٹ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں فوری طور پر عام انتخابات کرائے جائیں۔

دوسری جانب یورپین کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹسک کا کہنا تھا کہ اگر تھریسامے کو پارلیمنٹ سے ایک اور شکست ہوئی تھی تو میں 10 اپریل کو یورپین کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کروں گا۔

اس سے قبل برطانوی وزیراعظم کو بریگزٹ ڈیل میں پارلیمنٹ سے ووٹنگ پر 149 کے مقابلے میں 230 ووٹ سے شکست ہوئی تھی۔

واضح رہے کہ 27 مارچ کو بریگزٹ پر تھریسامے کی حکومت کو ایک اور ناکامی سامنا کرنا پڑا تھا، برطانوی اراکین پارلیمنٹ نے بریگزٹ کا اختیار وزیراعظم تھریسامے سے چھین لیا تھا۔

مزید پڑھیں: بریگزٹ ڈیل ناکام، 29 مارچ آگئی بریگزٹ نہ ہوسکا

یاد رہے کہ بریگزٹ ڈیل میں پارلیمنٹ سے ناکامی کے بعد برطانوی وزیراعظم تھریسامے نے مستعفی ہونے کا عندیہ دے دیا تھا۔

برطانوی وزیراعظم تھریسامے کا کنزرویٹو پالیمنٹری گروپ سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ بریگزٹ پر ہونے والے آئندہ مذاکرات میں حصہ بھی نہیں لوں گی۔

خیال رہے کہ بریگزٹ ڈیل کے بارہا مسترد ہونے کے باعث ریفرنڈم کے ذریعے طے شدہ تاریخ پر برطانیہ کا یورپی یونین سے انخلاء ممکن نہیں ہوسکا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں