The news is by your side.

Advertisement

برطانیہ میں 14 سال کے ہزاروں بچوں نے چاقو اٹھالیے

لندن : برطانوی دفتر داخلہ نے تحقیقاتی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ انگلینڈ اور ویلز میں 17 ہزار 500 نابالغ بچے چاقو اور دیگر اسلحے سے مسلح ہوتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی دفتر داخلہ نے ملک بھر میں بڑتی ہوئی چاقو زنی اور دیگر جرائم کی وارداتوں کے سدباب کے پیش نظر تحقیقاتی رپورٹ شائع کی ہے جس کے مطابق برطانیہ کے 14 سال سے کم عمر کے ہزاروں بچے اپنے ہمراہ چاقو یا دیگر اسلحہ لے کر گھومتے ہیں۔

تحقیقاتی رپورٹ میں واضح کیا گیا ہے کہ پر تشدد وارداتوں میں وہ بچے یا نوجوان زیادہ ملوث ہیں جن کے چار یا اس سے زیادہ بہن بھائی ہیں جبکہ کچھ بچوں کے جرائم پیشہ وارداتوں میں ملوث ہونے کی وجوہات میں بچوں سے بدسلوکی، زبردستی اور ڈانٹ ڈپٹ شامل ہے۔

برطانوی دفتر داخلہ کا کہناتھا کہ ملک کی 3اعشاریہ 47 فیصد آبادی اپنے ساتھ اسلحہ رکھتی اور استعمال کرتی ہےجب میں 71اعشاریہ 3 فیصد افراد رمرد ہیں۔

اس سے قبل برطانیہ میں بچوں کے حقوق کے کام کرنے والے کمشنر کی جاری کردہ رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ 10 برس سے 17 برس کی عمر کے ایسے 27ہزار بچوں کی شناخت ہوئی جو صرف انگلینڈ میں جرائم پیشہ گروہوں سے وابستہ ہیں۔

خیال رہے کہ برطانیہ میں دس سال میں 40 ہزار سے زائد چاقوزنی کی وارداتیں ہوئیں جس میں 730 افراد لقمہ اجل بنے۔

برطانیہ میں یومیہ 2 افراد چاقو کے حملوں میں جان کی بازی ہارتے ہیں، جبکہ ان حملوں میں گرفتار ہونے والے مشتبہ افراد میں سے صرف 8 فیصد کو چارج کیا گیا۔

برطانوی دارلحکومت لندن سمیت مختلف علاقوں میں بڑھتی ہوئی چاقو زنی کی واردات نے حکام کے لیے بڑا چیلنچ کھڑا کردیا، جس کی روک تھام کے لیے حکومت نے اقدامات کی یقین دہانی کرائی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں