سات ملکوں کے شہری دہشتگردی میں ملوث ہیں توثبوت دئیے جائیں، امریکی جج -
The news is by your side.

Advertisement

سات ملکوں کے شہری دہشتگردی میں ملوث ہیں توثبوت دئیے جائیں، امریکی جج

امریکا کی وفاقی عدالت کے جج نے کہا ہے کہ سات ملکوں کے شہری دہشتگردی میں ملوث ہیں توثبوت دئیے جائیں۔

امریکا کی وفاقی عدالت میں صدرڈونلڈ ٹرمپ کی سات ملکوں پر سفری پابندیوں کے حکم نامے کو کالعدم قراد دیے جانے کے خلاف اپیل کی سماعت ہوئی، جج نے اپنے ریمارکس میں سرکاری وکیل سے کہا کہ پابندی کا شکار ممالک کے شہری دہشتگردی میں ملوث ہیں تو اس کے ثبوت فراہم کئے جائیں۔

محکمہ انصاف کے اٹارنی کا کہنا تھا کہ صدر کو قومی سلامتی کے تحفظ کیلئے وسیع اختیارات حاصل ہیں۔

عدالت نے کیس کا فیصلہ جلد سنانے کا اعلان کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔


مزید پڑھیں : امریکی وفاقی جج نےٹرمپ کاامیگریشن آرڈرمعطل کردیا


صدرٹرمپ نے شام، ایران، عراق، لیبیا ، صومالیہ، سوڈان اور یمن کے شہریوں پر امریکا میں داخلے پرنوے روز کی پابندی عائد کی تھی، جسے سیاٹل کی عدالت نے کالعدم قرار دے دیا تھا۔

امریکی شہرسیٹل کے ڈسٹرکٹ جج جیمز رابرٹ نےصدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے سات ممالک پرلگائی جانے والی پابندی کے خلاف فیصلہ سنادیا۔فیصلے میں کہا گیا تھا کہ امیگریشن پالیسی سےسب سے زیادہ نقصان امریکی شہریوں کو ہوا۔

ٹرمپ انتظامیہ نے ایک بار اپیل مسترد ہونے کے بعد دوبارہ اپیل دائر کی ہے۔

واضح رہے نیویارک کی عدالت نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سات مسلمان ممالک اور تارکین وطن کےحوالے سے پابندی کے حکم نامے پر عمل درآمد روک دیا تھا جبکہ اس فیصلے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف ملک بھر میں مظاہروں کا آغاز ہوا تھا اور ایئرپورٹس پراس حکم نامے کےبعد بہت ابتر صورت حال دیکھنے کو ملی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں