The news is by your side.

Advertisement

کرونا کا علاج ’الو‘ سے ہوسکتا ہے، پولیس کے پکڑنے پر شہری کے ہوش ٹھکانے آگئے

نئی دہلی: کرونا وائرس کی وبا پھیلنے سے اب تک سوشل میڈیا پر لوگوں کی جانب سے جعلی خبریں پھیلائی جارہی ہیں جن میں کرونا وائرس سے بچنے کے متعدد ٹوٹکے بتائے گئے ہیں۔

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کا ابھی تک کوئی علاج دریافت نہیں ہوسکا ہے اور مختلف ممالک میں سائنسدان مذکورہ وبا کے علاج کے لیے ویکسین کی تیاریوں میں مصروف عمل ہیں لیکن ابھی تک اس میں کسی کو کامیابی نہیں مل سکی ہے۔

بھارت میں کرونا وائرس کو بھگانے کے لیے ہوائی فائرنگ اور سیاست دان کی جانب سےگو کرونا گو ریلی نکالے جانے کے بعد اب ایک معمر شہری نے کرونا وائرس کا انوکھا ہی علاج بتادیا، بزرگ شہری نے ’اُلو‘ سے کرونا وائرس کا علاج بتا کر سب کو ورطہ حیرت میں مبتلا کردیا ہے۔

مزید پڑھیں: ’گو کورونا گو‘ بھارتی رکن اسمبلی نے کورونا کے ساتھ احتیاطی تدابیر کا جلوس بھی نکال دیا

بھارتی پولیس نے جب بزرگ شہری کی کلاس لی تو انہوں نے اپنے ہی علاج کو بکواس قرار دیتے ہوئے یوٹرن لے لیا اور کہا کہ کرونا وائرس کا علاج الو میں نہیں بلکہ صرف ڈاکٹروں کے پاس ہی ہے جو بھی وائرس میں مبتلا ہو وہ ڈاکٹرز سے رجوع کرے۔

واضح رہے کہ دنیا بھر میں کرونا وائرس سے ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 88 ہزار سے تجاوز کرچکی ہے جبکہ بھارت میں وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 6 ہزار کے قریب پہنچ گئی ہے اور کرونا وائرس سے اب تک 178 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں