The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ نے کرونا وبا سے پیدا بحران کی ذمہ داری قبول کر لی

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے آخری صدارتی مباحثے کے دوران کرونا وبا سے پیدا بحران کی ذمہ داری قبول کر لی۔

تفصیلات کے مطابق آج ٹرمپ اور ڈیموکریٹک امیدوار جوبائیڈن کے درمیان الیکشن سے قبل آخری صدارتی مباحثہ ہوا، ٹرمپ نے کہا میں امریکا میں کرونا وائرس سے پیدا بحران کی ذمہ داری لیتا ہوں۔

ٹرمپ کا یہ بھی کہنا تھا کہ امریکا میں کرونا وائرس آنا میری یا جو بائیڈن کی غلطی نہیں بلکہ چین کی ہے، یہ چین کی غلطی کے باعث دنیا میں پھیلا، تاہم جب میں نے کرونا سے بچاؤ کے لیے چین سے پروازیں بند کیں تو بائیڈن نے مخالفت کی۔

امریکی صدر نے کہا میں جوبائیڈن کی طرح کرونا سے ڈر کر تہہ خانے میں نہیں رہ سکتا، ملک اور قوم کو بند کر کے نہیں رکھ سکتے، جوبائیڈن صرف شٹ ڈاؤن کی بات کرتے ہیں، ہمیں اسکول کھولنے ہوں گے، ہم کرونا کے ساتھ زندگی گزارنا سیکھ رہے ہیں، اگر بیوروکریسی میں سے کسی ایک نے بھی کہا کہ ملک بند کریں تو جوبائیڈن کر دے گا۔

اس پر جو بائیڈن نے لقمہ دیا کہ زندگی گزارنا نہیں امریکا میں لوگ کرونا وائرس کے ساتھ مرناسیکھ رہے ہیں۔

بھارت کو گندا ملک کہنے والا دنیا کا پہلا صدر، سنسنی خیز بیان

ٹرمپ نے جواب دیا کہ امریکا میں خدشات کے برعکس کرونا سے اموات بہت کم ہو گئی ہیں، چند ہفتوں میں ویکسین بھی آ جائے گی اور کرونا چلا جائے گا۔ تاہم جو بائیڈن نے کہا کرونا وائرس کے باعث آنے والا موسم سرما سیاہ ہوگا، ہم کرونا وائرس کو شٹ ڈاؤن کریں گے، ملک کو نہیں، اس بحران میں ٹرمپ کوئی ذمہ داری نہیں لے رہے۔

جوبائیڈن نے کہا صدر ٹرمپ کے پاس وبا سے مقابلہ کرنے کا کوئی منصوبہ نہیں، کرونا ناکامی پر ٹرمپ کو صدارتی انتخاب کے لیے ہی نا اہل کرنا چاہیے، میں منتخب ہوکر کرونا پیدا بحران ختم کروں گا، ہم یقینی بنائیں گے کہ سب لوگ ہر وقت فیس ماسک پہنیں۔ ٹرمپ نے کہا تھا فکر نہ کریں ہم کرونا سے نمٹ لیں گے، اگر کوئی شخص ان اموات کا ذمہ دار ہے تو اسے صدر نہیں رہنا چاہیے۔

دوسرے ملکوں سے پیسہ لینے کا الزام

ٹرمپ نے جوبائیڈن کےالزام پر رد عمل میں کہا جوبائیڈن فیملی نے روس، چین اور یوکرین سے پیسہ لیا، مجھے روس سے کبھی کوئی پیسہ نہیں ملا۔ جوبائیڈن نے بھی کہا میں نے تمام عمر بیرونی قوتوں سے ایک پائی بھی نہیں لی۔

ٹرمپ نے کہا روس کے معاملے پر مجھ سے زیادہ کوئی سخت نہیں، شمالی کوریا سے کوئی جنگ نہیں، کم جونگ ان سے اچھے تعلقات ہیں، دیگر ممالک کے سربراہان سے بہتر تعلقات رکھنا اچھی بات ہے۔ جوبائیڈن نے اس پر طنز کیا کہ ہاں یورپ پر حملے سے قبل ہٹلر کے بھی اچھے تعلقات تھے۔

جوبائیڈن نے کہا روس، چین اور ایران امریکی انتخابات میں مداخلت کر رہے ہیں، میں منتخب ہوا تو انتخابات میں مداخلت کرنے والے بھاری قیمت چکائیں گے، شمالی کوریا کو کنٹرول کروں گا اور اس کے ساتھ ذاتی سفارت کاری کا خاتمہ کریں گے، شمالی کوریا پر پابندیاں بڑھا کر مذاکرات پر مجبور کریں گے۔

تارکین وطن

جوبائیڈن نے کہا اگر میں منتخب ہوا تو ایک کروڑ 11 لاکھ تارکین کو امریکی شہریت دیں گے، ٹرمپ نے اپنی کمپنی کا چین میں بینک اکاؤنٹ چھپا رکھا تھا، میں کاروباری شخص تھا، میرے بہت سے بینک اکاؤنٹس ہیں۔ ٹرمپ نے کہا سیاہ فام کمیونٹی کے لیے مجھ سے زیادہ کسی اور نے کچھ نہیں کیا۔ اس پر جوبائیڈن نے کہا پتا نہیں صدر ٹرمپ کہاں سے یہ اعداد و شمار لاتے ہیں۔ ٹرمپ یہ بھی سمجھتے ہیں ہوا سے بجلی بنانے سے کینسر پھیلتا ہے۔ ٹرمپ نے جواب دیا کہ ہاں مجھے معلوم ہے ہوا سے بجلی بنانے سے تمام پرندے مر جائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں