The news is by your side.

Advertisement

صدر ٹرمپ نے شام سے امریکی فوج واپس بلانے کا اعلان کردیا

دمشق/ورجینیا: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شام سے اپنی افواج واپس بلانے کا اعلان کردیا، فوجی اہلکار جلد اپنی سرزمین پر واپس پہنچ جائیں گے۔

امریکی میڈیا کے مطابق صدر ڈونلڈ کا ریاست ورجینیا کے شہر رچمونڈ میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ شام میں امریکی فوج کا کام داعش کو شکست دینا تھا، فوج نے یہ کام بخوبی انجام دیا ہے اور فوجی اہلکار جلد اپنی سرزمین پر واپس پہنچ جائیں گے۔

ٹرمپ کے جاری کردہ بیان کے دو گھنٹے بعد ہی پینٹاگون کے ترجمان کا کہنا ہے کہ امریکی فوج کو سیریا میں رہنے کی ضرورت ہے جب تک آخری دہشت گرد کا خاتمہ نہ ہوجائے، اس وقت 2000 سے زائد امریکی فوجی سیریا میں موجود ہیں۔

بریفنگ کے دوران صحافیوں نے امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان ہیدر نوئرٹ سے سوال کیا کہ صدر نے شام سے امریکی فوج واپس بلانے کا اعلان کیا ہے، فوجی کب تک وطن واپس پہنچ جائیں گے تو ترجمان نے ٹرمپ کے اعلان سے لاعلمی کا اظہار کیا۔

قبل ازیں شام میں ایک امریکی سمیت 2 اتحادی فوجی ہلاک جبکہ 5 زخمی ہوگئے، امریکی حکام کی جانب سے شامی شہر منج میں ایک امریکی فوجی کی ہلاکت کی تصدیق کردی گئی ہے، شامی حکومت نے باغی گروہ جیش الاسلام کو غوطہ چھوڑنے کے لیے 72 گھنٹے کی ڈیڈ لائن دے دی ہے۔

شامی ٹی وی کے مطابق اس گروپ کے کچھ ارکان ابھی تک مشرقی غوطہ میں واقع قصبے دوما میں ہی ہیں، دمشق کے نواحی علاقے مشرقی غوطہ میں موجود آخری باغی گروہ نے ایسی رپورٹوں کو مسترد کردیا ہے کہ اس نے دوما کا قصبہ چھوڑنے کے حوالے سے روس سے کوئی معاہدہ کیا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں