The news is by your side.

Advertisement

ٹویٹر اکاؤنٹ‌ کی بحالی کے لیے ٹرمپ عدالت پہنچ گیے، درخواست میں‌ طالبان کا تذکرہ

واشنگٹن: امریکا کے سابق صدر ٹرمپ نے ٹویٹر اکاؤنٹ بحال کروانے کے لیے عدالت سے رجوع کرلیا۔

امریکی میڈیا رپورٹ کے مطابق ٹرمپ نے وفاقی جج کو ٹویٹر اکاؤنٹ بحال کرنے کے حوالے سے درخواست دی، جس میں آئی ڈی بحال کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق ٹرمپ نے فلوریڈا کی ضلعی عدالت میں درخواست دائر کی، جس میں استدعا کی گئی ہے کہ ٹویٹر انتظامیہ کے فیصلے کو کالعدم قرار دے کر حکم امتناع جاری کیا جائے۔

انہوں نے اپنی درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ ’ٹویٹر انتظامیہ کو امریکی کانگریس نے میرا اکاؤنٹ معطل کرنے پر مجبور کیا‘۔

ٹرمپ نے کہا کہ ’افغان طالبان کو تو ٹویٹر نے اظہار رائے کی اجازت دی ہوئی ہے مگر میرے ٹویٹس کو صدر ہوتے ہوئے بھی ڈیلیٹ کیا گیا اور مجھ پر ٹویٹ کے ذریعے جعلی، اشتعال انگیزی پھیلانے کے الزام عائد کیے گیے‘۔

امریکی صدر کی جانب سے دائر کی جانے والی درخواست پر ٹویٹر نے فوری کوئی ردعمل نہیں دیا البتہ کمپنی ذرائع نے بتایا کہ وہ اپنے فیصلے سے پیچھے نہیں ہٹیں گے اور عدالت میں لیگل ٹیم کو بھی بھیجیں گے۔

واضح رہے کہ ٹویٹر، فیس بک، انسٹاگرام اور یوٹیوب  نے 6 جنوری کو کیپٹل ہل کے باہر پیش آنے والے واقعے کے بعد ٹرمپ کے اکاؤنٹس عارضی طور پر بند کیے تھے، بعد ازاں انہیں مستقل بند کرنے کا اعلان کیا گیا۔

سوشل میڈیا کمپنیز نے مؤقف اختیار کیا تھا کہ ٹرمپ کے اشتعال انگیز ٹوئٹس، اسٹیٹس پالیسی کی خلاف ورزی ہیں، ایسے پیغامات سے نقصِ امن کو خطرہ ہوسکتا ہے، اسی پیش نظر پابندی عائد کی گئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں