امریکا میں پی ایل او کا دفتر بند کرنا پریشان کن ہے، ترکی Turkey-Criticizes-US
The news is by your side.

Advertisement

امریکا میں پی ایل او کا دفتر بند کرنا پریشان کن ہے، ترکی

انقرہ : ترکی حکومت نے امریکی فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ وایٹ ہاوس کا امریکا میں موجود فلسطین لبریشن آرگنائزیشن کا دفتر بند کرنے کا فیصلہ انتہائی پریشان کن ہے۔

تفصیلات کے مطابق ترک حکومت کی جانب سے امریکا میں واقع فلسطین لیبریشن آرگنائزیشن کے دفتر کو بند کرنے کے امریکی اقدام کو خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا کے فیصلے نے واضح کردیا کہ مشرق وسطیٰ میں قیام امن کے لیے امریکا غیر جانب دار نہیں رہ سکتا۔

ترکی کے دفتر خارجہ نے جاری بیان میں کہا ہے کہ ’امریکا کا فیصلہ عالمی اسلام اور خطے کے لیے پریشان کن ہے‘۔

دوسری جانب فلسطینی حکام نے کا کہا تھا کہ امریکا نے محض الزامات عائد کیے ہیں کہ اسرائیل سے بامعنی مذاکرات کے لیے فلسطین لبریشن آرگنائزیشن نے اقدامات نہیں اٹھائے، پی ایل او نے مشرق وسطیٰ میں امن کے لیے امریکی اقدام کی مذمت بھی کی۔

فلسطین لیبریشن آرگنائزیشن کے حکام کا کہنا ہے کہ ’امریکا اسرائیل کے ساتھ مذاکرات کرن کے لیے بیلک میل کرنےکو کہہ رہا ہے۔

یاد رہے کہ مشرقی وسطیٰ میں امن کے لیے امریکی اقدام کی مذمت کرنے پر امریکا نے واشنگٹن میں موجود فلسطین لبریشن آرگنائزیشن(پی ایل او) کا دفتر بند کرنے کا حکم دے دیا تھا۔

امریکی ترجمان کا کہنا تھا کہ پی ایل او نے امن کے لیے امریکا کے ساتھ کام کرنے سے انکار کیا، اسرائیل اور فلسطین میں براہ راست مذاکرات کے معاملے کو آگے بڑھا سکتے ہیں۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز امریکا نے فلسطینی اسپتالوں میں دی جانے والی امدادی رقم میں سے تقریباً 25 ملین ڈالر کی کٹوتی کا اعلان کیا ہے۔

امریکی حکام کا کہنا تھا ہے کہ یہ رقم اب دیگر ترجیحی منصوبوں کو منتقل کردی جائے گی، جہاں اسے بہتر انداز میں خرچ کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی امریکی محکمہ خارجہ نے فلسطینیوں کے لیے بیس کروڑ ڈالرز کی سالانہ مختلف امداد روک لینے کا اعلان کیا تھا، مذکورہ اقدام بھی امریکی صدر کے کہنے پر سامنے آیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں