ترک صدر نے شامی شہر ادلب پر حملہ پوری دنیا کے لیے خطرہ قرار دے دیا
The news is by your side.

Advertisement

ترک صدر نے شامی شہر ادلب پر حملہ پوری دنیا کے لیے خطرہ قرار دے دیا

انقرہ: ترک صدر رجب طیب اردوگان نے روسی حکام کو خبردار کیا ہے کہ شامی شہر ادلب پر حملے کی قیمت پوری دنیا کو ادا کرنی پڑسکتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ترکی کے صدر رجب طیب اردوگان نے شام میں روسی حملوں کے تناظر میں کہا ہے کہ اس کی قیمیت پوری دنیا کو ادا کرنی پڑے گی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ترک صدر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ شامی شہر ادلب پر حملہ ترکی سمیت دیگر یورپی ممالک کے لیے بھی سیکیورٹی خطرے کا باعث بن سکتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عالمی برادری کو اس معاملے پر اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، بصورت دیگر سنگین تنائج کا سامنا کرنا پڑے گا، حملے کی صورت میں سب متاثر ہوں گے۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز روس نے امریکا پر الزام عائد کیا تھا کہ اس نے شامی شہر ادلب میں ممنوعہ فاسفورس بم گرائے ہیں، جبکہ امریکا نے مذکورہ الزام کی تردید کی تھی۔

امریکا نے شام پر ممنوعہ بم گرائے: روس کا الزام

یاد ہے کہ گذشتہ دنوں شام کے معاملے پر روس، ترکی اور ایرانی سربراہان کے درمیان اہم ملاقات تہران میں ہوئی تھی جس میں فوجی کارروائیوں کے بجائے مذاکرات کے ذریعے شامی جنگی صورت حال کا حل نکالنے پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔

اس موقع پر ترک صدر رجب طیب اردوگان نے کہا تھا کہ شام میں فوجی ایکشن کے بجائے سیاسی حل نکالا جائے۔

واضح رہے کہ گذشتہ روز روسی فوج نے بھی شام میں تازہ حملے کیے تھے تاہم ہلاکتوں سے متعلق کوئی اطلاعات سامنے نہیں آئیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں