بدھ, مئی 29, 2024
اشتہار

غزہ کی تعمیرِ نو پر کتنی لاگت آئے گی؟

اشتہار

حیرت انگیز

اقوام متحدہ کا اندازہ ہے کہ غزہ کی تعمیرِنو پر 30 بلین سے 40 بلین ڈالر لاگت آئے گی۔

اقوام متحدہ کی ایک ایجنسی کا کہنا ہے کہ جنگ سے تباہ حال غزہ کی تعمیرنو کا تخمینہ 30 بلین ڈالر سے 40 بلین ڈالر لگایا گیا ہے اور اس پیمانے پر کوشش کی ضرورت ہوگی جو دوسری جنگ عظیم کے بعد دنیا نے نہیں دیکھی تھی۔

اقوام متحدہ کے اسسٹنٹ سیکرٹری جنرل عبداللہ الدارداری نے کہا کہ غزہ کی پٹی کی تعمیر نو کے لیے اقوام متحدہ کے ترقیاتی پروگرام کا ابتدائی تخمینہ 30 بلین ڈالر سے تجاوز کر گیا ہے اور یہ 40 بلین ڈالر تک پہنچ سکتا ہے۔

- Advertisement -

ان کا کہنا تھا کہ تباہی کا پیمانہ بہت بڑا اور بے مثال ہے یہ ایک ایسا مشن ہے جس سے عالمی برادری نے دوسری جنگ عظیم کے بعد نمٹا نہیں ہے۔

اس سے قبل اقوام متحدہ کے ایک اہلکار نے اپنا اندازہ پیش کیا تھا کہ اسرائیل کی تباہ کن جنگ نے غزہ کی پٹی میں ایک اندازے کے مطابق 37 ملین ٹن ملبہ چھوڑا ہے۔

اقوام متحدہ کی مائن ایکشن سروس کے سینئر افسر پرہ لودھامر نے جنیوا میں بریفنگ میں بتایا کہ اگرچہ وسیع پیمانے پر شہری آبادی والے، گنجان آباد علاقے میں نہ پھٹنے والے ہتھیاروں کی صحیح تعداد کا تعین کرنا ناممکن تھا لیکن یہ اندازہ لگایا گیا ہے کہ ملبے کو صاف کرنے میں 14 سال لگ سکتے ہیں۔

اس میں اسرائیل کی بمباری میں تباہ ہونے والی عمارتوں کا ملبہ بھی شامل ہو گا جس نے تنگ، ساحلی انکلیو کو ایک بنجر زمین میں تبدیل کر دیا ہے جس میں زیادہ تر شہری بے گھر، بھوکے اور بیماری کے خطرے میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ عام طور پر کم از کم 10 فیصد لینڈ سروس گولہ بارود کی ناکامی کی شرح ہوتی ہے جو فائر کیا جاتا ہے اور وہ کام کرنے میں ناکام رہتا ہے لیکن ہم 100 ٹرکوں کے ساتھ 14 سال کے کام کے بارے میں بات کر رہے ہیں۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں