The news is by your side.

Advertisement

یونیفائڈ ویزا پلیٹ فارم: ریکروٹنگ کمپنیوں کے کردار سے متعلق وضاحت

ریاض: سعودی عرب میں حال ہی میں یونیفائڈ ویزا پلیٹ فارم مقرر کیے جانے کے بعد ریکروٹنگ کمپنیوں کے کردار سے متعلق سوالات کیے جارہے ہیں جن کی حکام نے وضاحت پیش کی ہے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی حکام کی جانب سے وزارت خارجہ کو نیشنل یونیفائڈ ویزا پلیٹ فارم کے طور پر مقرر کیے جانے کے بعد ریکروٹنگ کے حوالے سے سوالات کیے جا رہے ہیں کہ کیا ریکروٹنگ کے نظام اور غیر ملکیوں کے ساتھ معاملات میں کوئی تبدیلی ہوگی یا پرانے نظام کے مطابق ہی کارروائی نیشنل یونیفائڈ ویزا پلیٹ فارم سے کی
جائے گی۔

سعودی کابینہ نے حال ہی میں فیصلہ جاری کیا ہے کہ وزارت خارجہ کو نیشنل یونیفائڈ ویزا پلیٹ فارم کے طور پر مقرر کیے جانے کے بعد غیر ملکیوں کے ساتھ معاملات اور ریکروٹنگ قانون سے تعلق رکھنے والی کارروائی میں کوئی تبدیلی نہیں ہوگی۔

سعودی کابینہ نے واضح کیا ہے کہ نیشنل یونیفائڈ ویزا پلیٹ فارم کے لیے وزارت خارجہ کا پلیٹ فارم استعمال کرنے کی منظوری کا مطلب یہ نہیں کہ ای سسٹم میں کوئی تبدیلی کی گئی ہو۔

سعودی کابینہ نے ہدایت جاری کی ہے کہ نیشنل انفارمیشن سینٹر، نیشنل یونیفائڈ ویزاپلیٹ فارم استعمال کرے گا۔

اس حوالے سے وزارت خارجہ کی ٹیکنیکل ورکنگ ٹیم تشکیل دی جائے گی تاکہ نئے فیصلے کے اجرا کی تاریخ سے ایک برس کے اندر وزارت خارجہ کا پلیٹ فارم نیشنل یونیفائڈ ویزا پلیٹ فارم کے طورپر استعمال کیا جانے لگے۔

کابینہ نے وزارت خارجہ میں ایک کمیٹی تشکیل دینے کی بھی ہدایت دی ہے جس کے ارکان متعلقہ سرکاری ادارے ہوں گے۔

خیال رہے کہ سعودی کابینہ نے حال ہی میں اس بات کی منظوری دی ہے کہ وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود ورکنگ ویزوں کی درخواستوں کی ذمہ دار ہوگی اور وہی وزارت خارجہ کے نیشنل یونیفائڈ ویزا پلیٹ فارم پر ملازمت کے ویزوں کی درخواستیں ارسال کرے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں