The news is by your side.

Advertisement

امریکی پارلیمان میں پائپ بم کہاں سے آئے؟ تحقیقات میں اہم پیشرفت

واشنگٹن : امریکی صدر ٹرمپ کے حامیوں کی جانب سے کی جانے والی کیپٹل ہل ہنگامہ آرائی میں نئی پیشرفت سامنے آئی ہے، پائپ بموں کے علاوہ آگ پکڑنے والا دھماکہ خیز مواد بھی مل گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پارلیمنٹ لاجز میں دو پائپ بم نصب کیے گئے تھے، ایف بی آئی اہلکار بم نصب کرنے والے ملزمان کو تلاش کررہے ہپں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق کیپٹل ہل میں اسلحہ لے جانے اور توڑپھوڑ کرنے پر90 افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ امریکی دارالحکومت واشنگٹن ڈی سی میں ہونے والے ہنگاموں اور پارلیمنٹ کی عمارت کی توڑ پھوڑ کی تحقیقات بھی تاحال جاری ہیں۔

اس حوالے سے سکیورٹی حکام کا یہ بھی کہنا ہے کہ وہاں موجود ایک گاڑی میں آگ پکڑنے والے مواد سے بھرا کولر بھی برآمد ہوا ہے۔

امریکی رائے عامہ میں کہا جا رہا ہے کہ واقعے کے بعد پولیس پرتشدد ہنگامہ آرائی کو روکنے میں ناکام ہوئی،  دوسری جانب کانگریس سے ذمہ داروں کو قانون کے کٹہرے میں لانے کا مطالبہ بھی کیا جا رہا ہے، میئر واشنگٹن نے واقعہ کو دہشت گردی قرار دے دیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں