امریکا نے پابندیوں کے بعد ایرانی سرگرمیوں پر نظر رکھنا شروع کردیا، ایران پریشان
The news is by your side.

Advertisement

امریکا کی پابندیوں کے بعد ایرانی سرگرمیوں پر کڑی نظر

واشنگٹن: امریکا نے ایران پر نئی اقتصادی پابندیاں عائد کرنے کے بعد خطے میں ایرانی سرگرمیوں پر کڑی نظر رکھنا شروع کردی۔

تفصیلات کے مطابق امریکا نے ایران کو مشرقی وسطیٰ کے لیے خطرناک قرار دے کر اس کی سرگرمیوں اور حکمت عملی پر خصوصی توجہ مرکوز کرلی۔

امریکی میڈیا کے مطابق مشرقی وسطیٰ میں ایرانی سرگرمیوں کے خلاف امریکی دباؤ بڑھایا جا رہا ہے، پابندیوں کے بعد ایران نئی حکمت عملی اپنا سکتا ہے۔

امریکی اعلیٰ عہدیدار کا کہنا ہے کہ امریکا تہران پر اقتصادی دباؤ بڑھانے کے بعد اب شام، عراق اور یمن میں ایرانی سرگرمیوں پر بھی توجہ مرکوز کی جا رہی ہے۔

اس سے قبل بھی متعدد بار امریکا، سعودی عرب اور اسرائیل متعدد مرتبہ ایران کے خطے میں بڑھتے ہوئے اثرو رسوخ کے حوالے سے اپنے خدشات کا اظہار کر چکے ہیں۔

ایرانی تیل کی فروخت پرپابندیاں آہستہ آہستہ لگائیں گے‘ ڈونلڈ ٹرمپ

خیال رہے کہ رواں سال مئی میں وائٹ ہاؤس سے جاری بیان میں وائٹ ہاؤس کی پریس سیکریٹری سارہ ہکابی سینڈرز نے کہا تھا کہ ایرانی پاسدارانِ انقلاب مشرق وسطیٰ میں بدامنی پھیلانے کے لیے ذمے دار ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ ایران کی ’آوارہ گردی‘ خطے کی سلامتی کے لیے سنگین خطرہ بن چکی ہے، اسے راہ رست پر لانے کے لیے دنیا تہران پر سخت دباؤ ڈالے۔ خیال رہے کہ امریکا نے ایران کے ساتھ جوہری معاہدہ ختم کرنے کے بعد ایران پر پابندیاں عائد کرنے کا آغاز کردیا ہے۔

یاد رہے کہ گذشتہ دنوں امریکا نے ایران پر نئی اقتصادی پابندیاں عائد کی ہیں جس سے ایرانی تیل کی برآمدات شدید متاثر ہیں۔

دوسری جانب دو روز قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ میں چاہوں تو ایرانی تیل کی فروخت صفر کردوں لیکن ایسا کرنے سے عالمی منڈی پربرے اثرات مرتب ہوں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں