site
stats
عالمی خبریں

صدرڈونلڈٹرمپ کوجھٹکا،نیا سفری حکمنامہ چیلنج کردیا گیا

واشنگٹن : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو ایک اور جھٹکا سفری پابندیوں سے متعلق ٹرمپ کا نظرثانی شدہ حکم پانچ ریاستوں نے چیلنج کر دیا ہے۔

امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کے لئے فیصلوں پر عملدرآمد مشکل ہونے لگا، پانچ امریکی ریاستوں واشنگٹن، اوریگن، منی سوٹا، نیویارک اور میساچیوسٹس اور ہوائی نے ٹرمپ کے نئے سفری حکم نامہ کو غیرآئینی قرار دیتے ہوئے عدالت میں چیلنج کردیا۔

امریکی ریاست ہوائی کے اٹارنی جنرل نے حکم نامے کو مسلمانوں پر پابندی کی نئی شکل قرار دیتے ہوئے کہا کہ نیا حکم نامہ بنیادی طور پر پہلے جیسا ہی ہے، اس میں کچھ تبدیل نہیں ہوا، نئے حکم نامے میں بھی مسلم اکثریتی ممالک سے آنے والوں کے داخلے پر وہی پابندی ہے، دائر کی جانے والی حالیہ درخواست میں نئے صدارتی حکم نامے کو ہنگامی طور پر معطل کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے، مقدمے کی سماعت پندرہ مارچ کو کی جائے گی۔

ریاستِ واشنگٹن کے اٹارنی جنرل بوب فرگوسن نے کہا ہے کہ ریاستوں کے پاس ٹھوس قانونی دلیل موجود ہے۔ صدر کا نیا امیگریشن حکم نامہ اصل کے مقابلے میں ’’محدود‘‘ نوعیت کا ہے۔ لیکن، اس کا مطلب ہرگز یہ نہیں کہ اس سے اُس میں حائل آئینی مسائل حل ہو جاتے ہیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے مسلم اکثریتی ممالک کے شہریوں پر سفری پابندیاں عائد کرنے سے متعلق ترمیم شدہ انتظامی حکم نامہ جاری کیا تھا جس کا اطلاق 16 مارچ سے ہونا ہے۔


مزید پڑھیں : امریکا میں‌ 6 مسلم ممالک کے شہریوں‌ کا داخلہ بند، نیا حکم جاری


نئے حکم نامے میں عراق کے علاوہ چھ مسلمان ملکوں پر ویزا پابندی عائد کی گئی ہے جبکہ پہلے حکم نامے میں عراق بھی شامل تھا، وائٹ ہاؤس کا مزید کہنا تھا کہ نئے ایگزیکٹو آرڈر کے مطابق شام، ایران، لیبیا، صومالیہ، یمن اور سوڈان سے تعلق رکھنے والے شہریوں کے امریکا میں داخلے پر 90 دن کی پابندی برقرار رہے گی اور انہیں اس عرصے کے دوران امریکی ویزے جاری نہیں کیے جائیں گے۔

ٹرمپ کے سفری پابندیوں کے حکم نامے کے خلاف بڑے پیمانے پراحتجاج کیا گیا تھا۔

وینزویلا کے صدرنکولس مدورونے ٹرمپ کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ٹرمپ کی پالیسیاں مسلمان اور پناہ گزین دشمن ہیں۔

دوسری جانب واشنگٹن کے ریسٹورنٹ مالکان نے ٹرمپ کے ریسٹونٹس اورہوٹل کے خلاف بزنس کونقصان پہنچانے کا مقدمہ کردیا، ریسٹورنٹ مالکان کا کہنا ہے کہ ٹرمپ ہوٹل امریکی صدر کی حیثت سے فائدہ اٹھا کر دوسرے کے بزنس کو نقصان پہنچا رہا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top