The news is by your side.

Advertisement

امریکی سپریم کورٹ نے اسلحہ ساتھ رکھنے پر پابندی ختم کر دی

امریکی سپریم کورٹ نے اسلحے پر پابندی ختم کرتے ہوئے عوامی مقامات پر اسلحے ساتھ رکھنے کو قانونی قرار دے دیا۔

عدالت نے فیصلے میں کہا ہے کہ عوامی مقامات پر اسلحہ ساتھ رکھنا شہری کا بنیادی حق ہے۔ عدالت نے نیویارک ریاست کے ایک دہائیوں پرانے قانون کو غیر آئینی قرار دیا ہے جس کے تحت عوامی سطح پر شہریوں کو اپنے ساتھ اسلحے رکھنے کے لیے ‘مناسب وجہ’ بتانا تھی۔

‘نیویارک لا’ قانون نے مقامی حکام کو یہ فیصلہ کرنے کا صوابدیدی اختیار دیا تھا کہ وہ کس کو بندوق ساتھ رکھنے کا لائسنس دیں۔

عدالت نے فیصلے میں واضح کیا ہے کہ یہ قانون امریکی آئین کی 14 ویں ترمیم کی خلاف ورزی ہے جس کے مطابق کوئی بھی ریاست ایسا قانون نہیں بنا سکتی اور نہ نافذ کرسکتی ہے جو شہریوں کو مراعات اور استثنیٰ کو زیر کر لے۔

امریکی صدر جوبائیڈن نے فیصلے پر کڑی تنقید کرتے ہوئے اس کی مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ فیصلہ عقل و فہم سے بالاتر ہے ایسا فیصلہ پریشان کن ہے اور آئین کی نفی کر تا ہے۔

نیویارک کی گورنر کیتھی ہوچول نے بھی فیصلے پر تنقید کرتے ہوئے اسے ملک کے لیے سیاہ ترین قرار دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں