The news is by your side.

Advertisement

سمندری جانور سے چھیڑ‌ چھاڑ، نوبیاہتا جوڑے پر جرمانہ عائد

امریکا میں پانی کی بلی سے چھیڑ چھاڑ کرنے والے نوبیاہتا جوڑے پر بھاری جرمانہ عائد کردیا گیا۔

برطانوی میڈیا رپورٹ کے مطابق امریکی ریاست ہوائی میں نوبیاہتا جوڑا ہنی مون پر آیا، میاں بیوی جزیرے پر موجود تھے کہ اس دوران خاتون نے خشکی پر موجود پانی کی بلی کو جاکر چھوا اور ویڈیو بھی بنائی۔

خاتون نے یہ ویڈیو  ٹک ٹاک پر شیئر کی مگر وہاں سے ایک صارف نے اسے ڈاؤن لوڈ کر کے انسٹاگرام پر شیئر کیا اور متعلقہ حکام کی اس مسئلے پر توجہ دلائی۔

رپورٹ کے مطابق لوزیانا سے تعلق رکھنے والا یہ جوڑا گزشتہ ماہ ہنی مون پر گیا تھا، جس کی ویڈیو دو روز قبل انسٹاگرام پر وائرل ہوئی اور اسے ایک روز پہلے تک 60 ہزار سے زائد لوگوں نے دیکھا۔

ویڈیو میں خاتون کو پانی کی بلی (سیل) کے ساتھ تصویر لیتے اور پھر اُسے چھیڑتے ہوئے دیکھا گیا، جس پر بلی نے انہیں کاٹنے کی کوشش کی۔

سیل کے حملے پر خاتون وہاں سے بھاگیں جس پر پانی کی بلی دوبارہ سکون سے ریت پر لیٹ گئی۔

امریکی میڈیا کے مطابق سمندر اور ماحولیات کے تحفظ کے لیے کام کرنے والے ادارے نے مونک سیل کو پریشان کرنے والے جوڑے پر جرمانہ عائد کیا، اس حوالے سے ابھی فی الحال زیادہ تفصیلات فراہم نہیں کی گئیں۔

امریکی میڈیا کے مطابق ہوائی کے ریاستی قانون کے مطابق جوڑے کو پچاس ہزار ڈالرز تک جرمانہ اور پانچ سال قید کی سزا کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

سیل کو چھونے والی خاتون کے شوہر نے مقامی اخبار سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ’جزیرے پر کوئی انتباہی بورڈ موجود نہیں تھا، اسی وجہ سے اہلیہ اُس کے ساتھ کھیل رہیں تھی، ہمارا کسی کو تنگ کرنے یا قانون کی خلاف ورزی کا کوئی ارادہ نہیں تھا، ہمیں اس واقعے پر بہت افسوس ہے‘۔

این او اے اے کے مطابق ہوائی مونک سیل کرہ ارض پر سب سے زیادہ معدومیت کے خطرے کا سامنا کرنے والی انواع میں سے ایک ہے اور اس نسل کے تقریباً 1400 جانور بچے ہیں۔ یہ ہوائی کے تمام جزیروں پر پائے جاتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں