امریکا، غیر ملکی افراد کی تعداد میں ریکارڈ اضافہ -
The news is by your side.

Advertisement

امریکا، غیر ملکی افراد کی تعداد میں ریکارڈ اضافہ

واشنگٹن: امریکا میں پیدا ہونے والے غیر ملکی افراد کی تعداد  100 سال کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گئی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ کے مطابق امریکی صدر ٹرمپ کی ویزہ پالیسی پر سختی کے باوجود امریکا میں غیر ملکی افراد کی تعداد گزشتہ 100 سال کے مقابلے میں دگنی ہوگئی۔

رپورٹ کے مطابق امریکا میں رہائش پذیر غیر ملکی افراد کی تعداد سال 2017 میں 4 کروڑ چالیس لاکھ تک پہنچ گئی تھی جو گزشتہ برس کے مقابلے مٰں 1.8 فیصد زیادہ تھی۔

وائٹ ہاؤس انتظامیہ نے غیر ملکیوں کی تعداد میں ہونے والے اضافے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم امیگریشن کو محدود کرنا چاہتے ہیں تاکہ امریکی نوجوانوں کو بھی مواقع فراہم کیے جاسکیں۔

انتظامیہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ٹرمپ نے 2017 میں عہدہ سنبھالنے کے بعد سب سے پہلے غیر قانونی تارکین کے خلاف اقدامات کا حکم دیا تاکہ بڑھتی ہوئی غیر ملکی آبادی کو قابو میں کیا جاسکے۔

مزید پڑھیں: امریکا نے تارکین وطن کے خلاف مقدمات عارضی طور پر روک دئیے

ادارہ شماریات کی جانب سے جاری اعداد و شمار کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 2017 میں امریکا کی آبادی کا 13.7 فیصد حصہ غیر ملکی افراد پر مشتمل تھا جبکہ یہ شرح 2016 میں 13.5 فیصد تھی۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکا میں غیر ملکی افراد کی تعداد میں اضافہ 1910 سے ہوا، اُس وقت آبادی کا 14.7 فیصد حصہ غیر ملکیوں پر مشتمل تھا مگر گزشتہ بیس سالوں میں ایشیائی اور دیگر ممالک کے شہری اعلیٰ تعلیم کے لیے آئے جنہوں نے یہاں گھر بسا لیے۔ رپورٹ میں غیر ملکی افراد میں سب سے زیادہ تعداد میکسیکو کے شہریوں کی بتائی گئی ہے۔

ماہر شماریات رینڈی کیپس کا کہنا تھا کہ حکومت نے قانونی امیگریشن پر ابھی تک سختی سے عمل درآمد نہیں کیا یہی وجہ ہے کہ غیر ملکی شہری ابھی بھی ملازمتوں اور حصولِ تعلیم کے لیے امریکا آرہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں