The news is by your side.

Advertisement

بغیر نسخے کے ڈیکسامیتھازون کا استعمال زہر قاتل قرار

لاہور : ماہرین نے بغیر نسخے کے ڈیکسامیتھازون کے استعمال کو زہر قاتل قرار دے دیا ہے ڈاکٹر جاوید اکرم نے کہا  کورونا کے ہرمریض کو اس دوا کا استعمال نہیں کرایا جاسکتا، یہ دوا فالج اور انفیکشنز کا سبب بن سکتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے وائس چانسلر ڈاکٹر جاوید اکرم نے اے آر وائی نیوزسے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈیکسا میتھازون کارٹیز ون ہے ، دوا کا مارکیٹ سےغائب ہونا ذخیرہ اندوزی ہے لیکن یہ مختلف فارم میں وافر مقدار میں موجود ہے، ذخیرہ اندوزی کا کوئی فائدہ نہیں۔

ڈاکٹر جاوید اکرم کا کہنا تھا کہ ڈٖیکسامیتھازون کوکورونا کےہرمریض کواستعمال نہیں کرایاجاسکتا،ڈ صرف ڈاکٹر کی ہدایات پر ہی دی جاسکتی ہے۔

یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے وائس چانسلر نے کہا کہ پاکستان میں تقریباً ہر ڈاکٹر کورونا کے مریضوں کے علاج کے لئے اسکا استعمال کررہاہے، یہ دوا وائرس سے بچاؤ کا ذریعہ نہیں کیونکہ ڈٖیکسامیتھازون کوکورونا کےہرمریض کواستعمال نہیں کرایاجاسکتا، صرف ڈاکٹر کی ہدایات پر ہی دی جاسکتی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ڈاکٹر کی تجویز کے بنا اسکا استعمال جان لیوا ہوسکتا ہے، دوا کے نا مناسب ڈوز سےگردےخراب ہونےکاخطرہ ہے جبکہ فالج اور انفیکشنزکاسبب بن سکتی ہے۔

خیال رہے ادویات ساز اداروں اور ڈسٹری بیوٹرز نے کورونا مریضوں کی جان بچانے والی دوا ‘ڈیکسا میتھازون کی قیمتوں میں 100گنا اضافہ کردیا ہے، ہول سیل کیمسٹ کونسل آف پاکستان کے صدر عاطف بلو کہنا ہے کہ کمشنر کراچی کو صورتحال سے آگاہ کردیا ہے کہ ادویات کی قلت اور نرخوں کے اضافے کے ذمہ دار ہول سیل ادویات فروش نہیں بلکہ ادویات ساز کمپنیاں اور ان کے مخصوص سٹریبیوٹرزہیں۔

واضح رہے برطانیہ کے سائنسدانوں نے اسٹیرائیڈ دوا ڈیکسا میتھازون کو کرونا وائرس کے علاج میں انتہائی موثر قرار دیا تھا، برطانوی سائنسدان پروفیسر پیٹر ہاربے کا کہنا تھا کہ یہ اب تک کی پہلی دوا ہے جس نے کرونا میں اموات کو کم کر کے دکھایا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں