site
stats
پاکستان

عزیربلوچ، نثارمورائی اور سانحہ بلدیہ کی جےآئی ٹیزمنظرعام پرلانے کا مطالبہ

کراچی : عزیربلوچ، نثارمورائی اور سانحہ بلدیہ کی جےآئی ٹی رپورٹس منظر عام پر لانے کی درخواست پر سندھ ہائیکورٹ نے ستائیس فروری کی تاریخ مقرر کردی۔

تفصیلات کے مطابق لیاری گینگ وار کے سرغنہ عزیربلوچ، سابق چیئرمین فشریزنثارمورائی اورسانحہ بلدیہ کی جےآئی ٹی رپورٹس منظرعام پر لانے کی درخواست کی سماعت جسٹس صلاح الدین کی سربراہی میں دورکنی بینچ نے کی۔

درخواست گزار علی زیدی نے مؤقف اختیار کیا کہ جےآئی ٹیز پبلک کرنے کیلئےچیف سیکریٹری کوخط لکھا ہے مگرمثبت جواب ابھی تک نہیں ملا۔

درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی کہ سانحہ بلدیہ کی جے آئی ٹی رپورٹس کو پبلک کرنے کی ہدایت جاری کی جائے، متعلقہ حکمرانوں سے پوچھا جائے کہ تین سال سے جے آئی ٹیز پرکارروائی کیوں نہیں ہوئی؟

درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ سیاستدانوں اور پولیس افسران پر بھی سنگین جرائم کے الزامات ہیں، عزیربلوچ، نثارمورائی کے انکشافات کو نظرانداز نہیں کیا جا سکتا۔

درخواست گزار کے مؤقف پر سندھ ہائیکورٹ نےستائیس فروری کی تاریخ مقررکرتےہوئےسماعت ملتوی کردی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر ضرور شیئر کریں۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top