The news is by your side.

Advertisement

کینسر کی ویکسین کب تک مارکیٹ میں آ جائے گی؟

واشنگٹن: جرمن دوا ساز کمپنی بائیو این ٹیک کی تیار کی جانے والی کینسر ویکسین کو مارکیٹ میں آنے میں تین سے چار سال لگیں گے۔

تفصیلات کے مطابق بائیو این ٹیک کے بانیوں میں سے ایک پروفیسر ڈاکٹر اوعور شاہین نے کہا ہے کہ ہم اپنی تیار کردہ کینسر ویکسین سے پُر امید ہیں، ویکسین کو مارکیٹ میں آنے میں تین سے چار سال لگیں گے۔

اوعور شاہین کے مطابق کینسر کی مختلف اقسام پر اس ویکسین کے کلینیکل تجربات جاری ہیں، ابتدائی نتائج میں دیکھا گیا ہے کہ بعض مریضوں میں ویکسین کی وجہ سے ٹیومر میں سکڑاؤ آیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ویکسین کے درست ملاپ سے ٹھوس ٹیومر کا بھی علاج کیا جا سکے گا، ہمارا ہدف صرف ٹیومر کو چھوٹا کرنا ہی نہیں بلکہ اس میں مستقل سکڑاؤ کا رجحان پیدا کرنا ہے۔

علاج کے قابل بھروسا ہونے کی طرف توجہ مبذول کرواتے ہوئے شاہین نے کہا کہ ویکسین کے مراحل نہایت جوش دلانے والے ہیں۔

واضح رہے کہ جرمن بائیو ٹیک کمپنی جس نے امریکی کمپنی فائزر کے ساتھ کرونا وائرس کی ویکسین کے لیے شراکت داری کی تھی اور اس طرح عالمی توجہ حاصل کی تھی، نے اب اپنی توجہ اپنے پہلے کے mRNA اہداف میں سے ایک کی طرف موڑ دی ہے، یعنی کینسر۔

Comments

یہ بھی پڑھیں