The news is by your side.

Advertisement

“گوار” ہمارے کس کام کی؟

صدیوں سے انسان گوار کی فصل کاشت کرتا آیا ہے۔ یہ پھلی دار فصل ہے جس کے پکوان برصغیر پاک و ہند میں بہت رغبت اور شوق سے کھائے جاتے ہیں۔

گوار کی پھلی کو ترکاری کے طور پر ہمارے ہاں مختلف طریقوں سے پکوان میں استعمال کیا جاتا ہے۔ مختلف مسالا جات کے ساتھ گوار کی پھلی کو پکا کر خوراک کا حصہ بنانے کے علاوہ گوشت اور دیگر سبزیوں کے ساتھ ملا کر ذائقے دار پکوان تیار کیے جاتے ہیں۔

گوار کی کاشت کے لیے گرم اور خشک آب و ہوا ضروری ہے۔

ماہرین کے مطابق گوار کا پودا نہایت سخت جان ہوتا ہے اور شدید گرمی اور پانی کی قلت کو برداشت کرسکتا ہے۔

گوار کی فصل کی کاشت عموماً ریتلے اور کم بارش والے علاقوں میں کی جاتی ہے۔

زرعی ماہرین کے مطابق گوار کی فصل کے سبز کھاد کے طور پر استعمال سے زمین کی زرخیزی بڑھانے میں مدد لی جاسکتی ہے۔

اسی طرح گوار میں پروٹین کی مخصوص مقدار کو جانوروں کے گوشت میں اضافے کا سبب بتایا گیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ یہ جانوروں کے چارے کے طور پر بھی استعمال ہوتی ہے۔

ماہرین کے مطابق اس فصل کی کاشت اور اس کی دیکھ بھال زیادہ محنت طلب نہیں ہے اور یہی وجہ ہے کہ برصغیر میں بڑے پیمانے پر کاشت کی جاتی ہے۔

گوار کے بیج میں ایک قسم کا گوند (گوار گم) پایا جاتا ہے جو دنیا بھر میں مختلف صنعتوں مٰیں مخصوص کام کے لیے استعمال ہوتا ہے۔

صحت اور علاج سے متعلق بات کریں تو گوار کو امراضِ قلب، شوگر جیسے موذی مرض کے لیے مفید بتایا جاتا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں