The news is by your side.

Advertisement

کے الیکٹرک کے خلاف عدالت کا بڑا فیصلہ

کراچی: سیشن عدالت نے کے الیکٹرک کی غفلت سے 12 سالہ لڑکے کو کرنٹ لگنے کے کیس میں فیصلہ سنا دیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کی سیشن عدالت نے کے الیکٹرک انتظامیہ کو 12 سالہ متاثرہ بچے کو کرنٹ لگنے کے کیس میں ڈیڑھ کروڑ روپے ہرجانہ دینے کا حکم جاری کر دیا۔

عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا شواہد سے کے الیکٹرک کی غفلت ثابت ہوتی ہے، بجلی فراہم کرنے والا ادارہ تاروں کی مرمت کا بھی پابند ہے۔

عدالت کا کہنا تھا ٹوٹے اور کھلے تار انسانی زندگی کے لیے خطرناک ہیں، کے الیکٹرک متاثرہ فریق کو ہرجانہ ادا کرے۔

واضح رہے کہ 12 سالہ سفیر 26 نومبر 2013 کو کرنٹ لگنے سے بری طرح متاثر ہوا تھا، اس واقعے میں عارف محمد نامی شہری جاں بحق بھی ہو گیا تھا۔

کے الیکٹرک اپنی غفلت کے باعث معذور بچے کا مکمل علاج کروانے کی پابند قرار

یاد رہے کہ 25 اگست 2018 کو بھی کراچی کے علاقے احسن آباد کے سیکٹر 4 کے رہائشی 8 سالہ عمر کو گھر کی چھت پر کھیلتے ہوئے 11 ہزار وولٹ کی کیبل سے کرنٹ لگا تھا جس سے اس کے دونوں بازو شدید متاثر ہوئے اور ڈاکٹرز کو ا س کی جان بچانے کے لیے دونوں بازو کاٹنے پڑے تھے۔

کے الیکٹرک کے خلاف مقدمہ آٹھ سالہ عمر کے والد محمد عارف کی مدعیت میں درج کیا گیا تھا، جس میں کے الیکٹرک گڈاپ ٹاؤن کی انتظامیہ کو ملزم نامزد کیا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں