The news is by your side.

Advertisement

وکٹر ہیوگو سے ملیے

وکٹر ہیوگو دنیائے ادب کے ان تخلیق کاروں میں سے ایک ہے جن کا نام اور کام صدی سے زائد عرصہ بیت جانے کے باوجود آج بھی زندہ ہے۔

وکٹر ہیوگو کا وطن فرانس ہے۔ اس لکھاری نے ناول نگاری، ڈراما نویسی اور شاعری بھی کی اور ہر صنفِ ادب میں اپنی انفرادیت برقرار رکھی۔

وہ زرخیز ذہن کا مالک تھا اور شاعر و ادیب ہی نہیں صحافی اور سیاست داں بھی تھا۔

اُنیسویں صدی کے اس نام ور لکھاری کی شہرت کا سفر بہ طور شاعر شروع ہوا تھا، اور بعد میں ناول نگار کے طور پر مقبولیت حاصل کی۔

اس فرانسیسی ادیب کا ایک ناول لیس مزرایبل عالمی ادب میں عظیم اور بڑا ناول شمار ہوتا ہے جس پر فلم بھی بنائی گئی۔ اس کے علاوہ دیگر ناولوں کی شہرت اور مقبولیت بھی آج تک برقرار ہے۔

وکٹر ہیوگو نے اس دور میں سماجی حقائق اور رویوں کے ساتھ اور معاشرے کے مخلتف روپ کو اپنی تخلیقات میں‌ پیش کیا اور لوگوں کی توجہ حاصل کی۔

وکٹر ہیوگو کے مشہورِ زمانہ ناول مزرابیل کا انگریزی کے علاوہ 22 مختلف زبانوں میں ترجمہ کیا گیا جس میں اردو بھی شامل ہے۔ اس ناول کے لیے وکٹر ہیوگو نے 1845 میں قلم تھاما تھا اور کہتے ہیں یہ 1861 میں مکمل ہوا۔

وکٹر ہیوگو کا سنِ پیدائش 1802 ہے اور اس کی زندگی کا یہ سفر 1885 تک جاری رہا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں