منگل, جون 18, 2024
اشتہار

یونیورسٹی طلبہ کی بکرے کو تنگ کرنے کی ویڈیو وائرل، لوگوں کا شدید رد عمل

اشتہار

حیرت انگیز

پشاور: خیبر پختون خوا کے سیاحتی مقام وادئ کمراٹ میں یونیورسٹی طلبہ کی بکرے کو تنگ کرنے کی ویڈیو وائرل ہوئی ہے، جس پر سوشل میڈیا صارفین نے شدید رد عمل دکھاتے ہوئے کہا کہ ’تعلیم سے جاہل کی جہالت نہیں جاتی۔‘

تفصیلات کے مطابق صوبہ خیبر پختون خوا کے ضلع اپر دیر کے سیاحتی مقام کمراٹ ویلی میں سیاحت کے لیے آئے نجی یونیورسٹی کے چند طلبہ کی قابل مذمت ویڈیو وائرل ہوئی ہے، جس میں انھیں ایک بکرے کو سینگوں اور ٹانگوں سے پکڑ کر اٹھاتے دیکھا جا سکتا ہے۔

ویڈیو کے مطابق ایک طالب علم نے ایک سفید بکرے کے سینگ پکڑے اور دوسرے طالب علم نے پیچھے سے اس کی ٹانگیں پکڑ لیں، اور پھر بکرے کو ہوا میں اوپر اٹھا لیا۔

- Advertisement -

طلبہ بکرے کے ساتھ اس طرح دل لگی کر رہے تھے جیسے وہ کوئی بے جان چیز ہو، انھیں جانور کو تکلیف دہ حالت میں اٹھانا بھی ایک مذاق لگ رہا تھا۔

یہ ویڈیو دیکھنے اور شیئر کرنے والوں نے جانوروں کے ساتھ انسانوں کے اس رویے پر جہاں افسوس کا اظہار کیا وہیں شدید تنقید بھی کی۔ سوشل میڈیا صارفین نے ویڈیو پر تبصرے کرتے ہوئے لکھا کہ ’جانوروں کے بھی حقوق ہوتے ہیں، اتنا تو دو سال کے بچوں کو بھی پتا ہوتا ہے، کیا فائدہ ایسی تعلیم کا،‘

مہک نامی صارف نے لکھا کہ ’کیا فائدہ ایسی تعلیم کا جو نہ تو تمیز سکھا سکے نہ دل میں کسی جاندار کے لیے رحم ڈال سکے؟‘ اگر ان کو بھی ایسے ہی کانوں سے پکڑ کر گھسیٹا جائے تو تب سمجھ آئے کہ اس معصوم کو بھی تکلیف ہوتی ہے۔‘

سرینا نے لکھا ’میرے دو سال کے بچے کو بھی پتا ہے کہ جانوروں سے اس طرح پیش نہیں آنا چاہیے۔ اگرچہ مرغیاں اسے تنگ کرتی ہیں پھر بھی بچے کو انہیں مارنے کی اجازت نہیں۔‘

ییلو اسٹورم نامی صارف نے لکھا ’دو گدھوں کو بکرا اٹھاتے پہلی بار دیکھ رہا ہوں۔‘

سید مصنف حسین کاظمی نے لکھا کہ ’تعلیم سے جاہل کی جہالت نہیں جاتی۔‘ ہائیڈروجن پرآکسائیڈ نام کے اکاؤنٹ نے لکھا ’بے وقوف بننے اور توجہ حاصل کرنے کی مثال ہے۔‘

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں