The news is by your side.

Advertisement

پھیپھڑوں اور دماغ میں کیڑے گھس گئے، نومولود کی رونگٹے کھڑے کرنے والی کہانی

ہنوئی: ویتنام میں ایک نوزائیدہ بچی کے پھیپھڑوں اور دماغ میں کیڑے مکوڑے گھس گئے تھے لیکن خوش قسمتی سے بچی کی جان بچ گئی۔

تفصیلات کے مطابق ویتنام سے تعلق رکھنے والے ایک نومولود کے پھیپھڑوں میں بھی کیڑے چلے گئے لیکن پھر بھی وہ زندہ بچ گئی، بچے کو اس کے والدین نے ایک تھیلی میں ڈال کر کھیتوں میں پھینک دیا تھا۔

یہ لاوارث بچی اب تین سال کی ہے، اور صحت مند ہے تاہم اس کی زندگی کے ابتدائی مہینوں کی کہانی سن کر درد مند دل رو پڑتا ہے، جب سگے ماں باپ نے اسے ایک تھیلی میں ڈال کر کھیتوں میں چھوڑا تو فصل کاشت کرتے ہوئے ایک کسان نے اس کے رونے کی آواز سنی۔

کسان نے دیکھا کہ ایک تھیلی میں بچہ پڑا ہے جس کو کیڑے اور لاروے کھا رہے ہیں، بچہ انتہائی شدید بری حالت میں تھا اور اس کی شکل بھی پہچانی نہیں جا رہی تھی۔

کسان نے بچے کو اسپتال پہنچایا، جہاں ایکسرے اور الٹراساونڈز ہوئے اور معلوم ہوا کہ نوزائیدہ کے پھیپھڑوں، ناک، دماغ اور کانوں کے اندر تک کیڑے مکوڑے، لاروے اور لال بیگ گھس چکے ہیں، بچے کے جسم پر کتے کے کاٹنے کے نشانات بھی پائے گئے۔

ٹیسٹس کرنے کے بعد ڈاکٹرز نے بتایا کہ بچی کو ہائیڈرا نینسیپلی hydranencephaly نامی بیماری ہے، جس میں اوپری دماغ کا آدھا حصہ غائب ہوتا ہے۔

بچی کی نازک صورت حال دیکھ کر ڈاکٹرز نے بچی کو علاج کے لیے سنگاپور لے جانے کا مشورہ دیا، جس پر خطیر رقم خرچ ہونی تھی، تب ویتنام کی چائلڈ پروٹیکشن بیورو کی منہائے تائے نامی خاتون سامنے آئیں، انھوں نے سوشل میڈیا پر بچی کے علاج کے لیے مدد کی اپیل کی، اور بچی کو اس طرح سنگاپور لے جایا گیا۔

ویتنام میں مشہور ہونے والی یہ بچی اب تین سال کی ہو چکی ہے، مہنائے تائے نے بچی کے والدین کو بہت ڈھونڈا لیکن وہ نہ مل سکے، ان کا کہنا تھا کہ وہ بچی پر اتنا ظلم کرنے والے والدین کو سخت سزا دلوانا چاہتی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں