تازہ ترین

پاکستان پر سفری پابندیاں برقرار

پولیو وائرس کی موجودگی کے باعث عالمی ادارہ صحت...

نو مئی کے مقدمات کی سماعت کرنے والے جج کیخلاف ریفرنس دائر

راولپنڈی: نو مئی کے مقدمات کی سماعت کرنے والے...

توشہ خانہ ریفرنس: نواز شریف کو کلین چٹ مل گئی

اسلام آباد : قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق...

جام شورو انڈس ہائی وے پر خوفناک حادثہ، 6 افراد جاں بحق

دادو : جام شورو انڈس ہائی وے پر ٹریفک...

آئی ایم ایف اور پاکستان کے درمیان معاہدے پر امریکا کا ردعمل

واشنگٹن: امریکا نے عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف)...

طالبہ پر تشدد: انکوائری افسران نے طالبات کے نام اسکول سے خارج کرنے کی سفارش کر دی

لاہور: چار طالبات کی جانب سے کلاس فیلو طالبہ پر تشدد کے کیس میں انکوائری افسران نے اسکول کی رجسٹریشن معطل کرنے، اور طالبات کے نام اسکول سے خارج کرنے کی سفارش کر دی۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کے اسکول میں طالبہ پر تشدد کے کیس میں ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی لاہور نے اپنی انکوائری رپورٹ مرتب کر لی ہے۔

رپورٹ مرتب کرنے والے انکوائری افسران نے اسکول کی رجسٹریشن معطل کرنے، اور اسکول کو 6 لاکھ روپے کا جرمانہ کرنے کی سفارش کی ہے۔

تشدد کرنے والی طالبات کے نام اسکول سے خارج کرنے کی بھی سفارش کی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ ڈی ایچ اے فیز 04 کے ایک نجی سکول کے کیفے ٹیریا کے باہر پیش آیا، جس میں چار طالبات نے اپنی کلاس فیلو پر تشدد کیا، جس سے اسکول میں نظم و ضبط کے فقدان کا پتا چلتا ہے، اسکول کے کیفے ٹیریا کے داخلی راستے پر کیمروں کی تنصیب بھی نہیں کی گئی ہے۔

انکوائری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ واقعے میں ملوث طالبات آپس میں دوست تھیں، اور یہ واقعہ اسکول سے باہر اسٹوڈنٹ پارٹی کی تصاویر والدین کے ساتھ شئیر کرنے پر پیش آیا۔

یہ انکوائری ڈی او زنانہ ایلیمنٹری ایجوکیشن لاہور، ڈپٹی ڈی او کینٹ اور ڈپٹی ڈی او ماڈل ٹاؤن نے کی ہے، سی ای او ایجوکیشن لاہور نے انکوائری رپورٹ ڈی سی لاہور کو ارسال کر دی ہے۔

ڈی سی لاہور محمد علی کل سفارشات کی روشنی میں اسکول کی رجسٹریشن کو معطل کرنے یا جرمانہ کا فیصلہ کریں گے، ڈی سی لاہور نے سی ای او ایجوکیشن کو تشدد کے واقعے کے بعد فوری انکوائری کرنے کی ہدایت کی تھی۔

Comments

- Advertisement -
حسن حفیظ
حسن حفیظ
حسن حفیظ ایک نوجوان صحافی ہیں اور اے آر وائی نیوز لاہور کے لئے صحت، تعلیم اور ایوی ایشن سے متعلق خبریں رپورٹ کرتے ہیں