The news is by your side.

Advertisement

سابق برطانوی وزیر اعظم کو قتل کی دھمکیاں، واجد شاہ کو قید کی سزا

لندن: برطانیہ میں مقیم تارک وطن واجد شاہ کو امیگریشن ٹیسٹ میں ماں کی ناکامی کے ڈر کی وجہ سے سابق برطانوی وزیر اعظم کو قتل کی دھمکیاں دینے کے جرم میں قید کی سزا سنا دی گئی۔

برطانوی میڈیا کے مطابق سلاؤ کے 27 سالہ شخص واجد شاہ کو، جس نے سابق وزیر اعظم تھریسا مے سمیت دیگر سیاست دانوں کو ای میل کے ذریعے موت کی دھمکیاں بھیجیں کیوں کہ اسے خدشہ تھا کہ اس کی والدہ برطانیہ امیگریشن ٹیسٹ میں ناکام ہو جائیں گی، 2 سال کے لیے جیل بھیج دیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق واجد شاہ نے سابق وزیر اعظم تھریسامے سمیت کئی ممبران پارلیمنٹ کو ای میلز کے ذریعے قتل کی دھمکی دی تھی، واجد شاہ کو خوف تھا کہ اس کی والدہ نورین انگلش امیگریشن امتحان پاس نہیں کر سکے گی۔

عدالت میں جج بارٹل کا کہنا تھا کہ واجد شاہ نے ایسے ہی میسجز موجودہ وزیر اعظم بورس جانسن اور دیگر اہم افراد کو بھیجے ہیں لیکن انھوں نے یہ وصول ہی نہیں کیے۔

جج نے اپنے فیصلے میں کہا کہ واجد شاہ کو بولنے کے شدید مسائل کا سامنا ہے تاہم وہ کسی ذہنی بیماری میں مبتلا نہیں ہے، اور رپورٹ کہتی ہے کہ اس کا آئی کیو لیول 58 ہے جو بہت ہی کم سطح پر ہے، جج نے نوٹ کیا کہ واجد شاہ کو سیکھنے کے مسائل کا سامنا ہونے کے باوجود اس نے امیگریشن اور جغرافیائی شعبوں سے وابستہ اراکین پارلیمان کو ہدف بنایا۔

واجد شاہ نے دھمکیوں پر مشتمل ای میلز میں یا تو اپنے والد عظمت شاہ کا نام لکھا یا پھر ایک سکھ خاتون جسمندر بدیال کا نام لکھا۔عدالت کو بتایا گیا کہ واجد شاہ کی فیملی گھر کے اندر بھی تقسیم ہو چکی ہے، بڑ ا بھائی واجد، چھوٹے بھائی عابد کے ساتھ اپنی ماں نورین کے ساتھ ایک ہی کمرے میں سوتے جاگتے، کھانا پکاتے ہیں، جب کہ والد ایک اور بیٹے کے ساتھ دوسرے کمرے میں رہتے ہیں۔

عدالت کو بتایا گیا کہ واجد شاہ کے والدین علیحدہ ہو چکے ہیں جس کی وجہ سے بچے بھی تقسیم ہو گئے، جب کہ واجد اور اس کا بھائی عابد اپنی والدہ پر انحصار کرتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں