The news is by your side.

Advertisement

لڑائی ختم، ماریوپول میں زندگی معمول پر آنے لگی

ماسکو: یوکرین کے شہر ماریوپول میں لڑائی ختم ہو گئی، اور زندگی معمول پر آنے لگی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ماریوپول کے حکام کا کہنا ہے کہ شہر کے رہائشی علاقوں میں کوئی لڑائی نہیں چل رہی ہے، زندگی آہستہ آہستہ معمول پر آ رہی ہے، شہر میں کوئی فوجی آپریشن نہیں ہے۔

شہر کے میئر نے کہا کہ مقامی لوگ اپنے گھروں کی عمارتیں، صحن اور ٹوٹی ہوئی کھڑکیوں کو تبدیل کرنا شروع کر سکتے ہیں، شہر میں پرامن زندگی لوٹ رہی ہے۔

واضح رہے کہ ڈونیسک ریپبلک کے رہنما ڈینس پوشیلین نے 6 اپریل کو ماریوپول کا نیا میئر مقرر کیا تھا، کونسٹنٹن ایواشینکو کا تعلق یوکرین کی اپوزیشن سے ہے، وہ ماریوپول سٹی کونسل کے سابق ممبر اور انجینئرنگ پلانٹ ازووماش کے سی ای او ہیں۔

یوکرین کا روس سے مذاکرات ختم کرنے کا انتباہ

دوسری جانب یوکرین کے صدر ولودیمیر زیلنسکی نے خواہش ظاہر کی ہے کہ روسی صدر پیوٹن سے براہِ راست ملاقات سے جنگ ختم ہو سکتی ہے۔

دارالحکومت کیف میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے یوکرین کے صدر ولودیمیر زیلنسکی نے کہا کہ سفارت کاری سے جنگ ختم کرنے کا واحد راستہ صدر پیوٹن سے بالمشافہ ملاقات ہے۔

یوکرینی صدر نے کہا کہ روسی صدر سے ملنے سے خوف زدہ نہیں ہوں، اگر ماریوپول میں یوکرینی فوجی مارے گئے تو کیف ماسکو کے ساتھ بات چیت ترک کر دے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں