The news is by your side.

Advertisement

مساجد میں وضو کے لیے استعمال ہونے والا پانی پودوں کو دیا جائے گا

لاہور: واسا (واٹر اینڈ سینی ٹیشن ایجنسی) نے مساجد میں وضو کے لیے استعمال ہونے والا پانی شہر میں ہریالی بڑھانے کے لیے استعمال کرنے کا فیصلہ کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق واسا نے کہا ہے کہ وضو کے دوران استعمال ہونے والا پانی ٹینکوں میں ذخیرہ کیا جائے گا، تاکہ یہ پانی ضائع نہ ہو اور ہریالی بڑھانے کے لیے کام آ سکے۔

لاہور میں واقع مختلف پارکوں کے ساتھ بنی ہوئی 70 مسجدوں کے لیے واٹر ٹینک بنائے جائیں گے۔

واسا

واسا کا کہنا ہے کہ لاہور میں واقع مختلف پارکوں کے ساتھ بنی ہوئی 70 مسجدوں کے لیے ایسے واٹر ٹینک بنائے جائیں گے جن میں وضو کا پانی جمع کیا جائے گا۔

واسا کے مطابق یہ جمع شدہ وضو کا پانی لاہور کے پارکوں میں موجود پودوں اور درختوں کو دیا جائے گا، اس سے نہ صرف پانی ضائع ہونے سے بچے گا بلکہ زیرِ زمین پانی کی سطح بھی بہتر ہوگی۔

اس سلسلے میں وزیرِ ہاؤسنگ پنجاب محمود الرشید نے لاہور میں واسا کی جانب سے شروع کیے جانے والے ایک پائلٹ پراجیکٹ کا افتتاح بھی کر دیا ہے۔


یہ بھی پڑھیں:  پاکستانی سائنس دان کا کارنامہ، استعمال شدہ پانی کی ری سائیکلنگ کا طریقہ دریافت


واسا نے کہا ہے کہ مذکورہ پائلٹ پراجیکٹ پارکس اینڈ ہارٹی کلچر اتھارٹی کے سپرد کر دیا گیا ہے، پی ایچ اے پارکوں سے ملحقہ مساجد میں ٹینکس بنائے گا۔

خیال رہے کہ پاکستان تحریکِ انصاف کی حکومت ملک میں ہریالی بڑھانے کے لیے کروڑوں درخت لگانے کی ایک بڑی مہم بھی پوری کر چکی ہے، جب کہ ملک بھر میں پانی کے مسائل سے بھی نمٹنے کے لیے اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں