کراچی: پی آئی اے احتجاجی ملازمین اور پو لیس میں جھڑپ، دو ملازم جاں بحق -
The news is by your side.

Advertisement

کراچی: پی آئی اے احتجاجی ملازمین اور پو لیس میں جھڑپ، دو ملازم جاں بحق

کراچی: پی آئی اے ملازمین کے احتجاج کے دوران پولیس اور رینجرز نے دھاوابول دیا، آنسو گیس شیلنگ اور واٹر کینن کا استعمال کیا گیا، فائرنگ سے دو ملازم جاں بحق ہوگئے۔

کراچی میں پی آئی اے کے ملازمین کی طرف سے مظاہرے کے دوران احتجاج کرنے والوں کی پولیس سے جھڑپ ہو ئی، پولیس اور رینجرز کی طرف سے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کا استعمال کیا گیا۔

لازمی سروس کے قانون کے بعد حکومت نے ایک اور وار کیا، ملازمین کے جاری احتجاج کو کچلنے کے لئے حکومت فل ایکشن میں آگئی، ملازمین نےاحتجاجی ریلی نکالی، ریلی جب کارگو گیٹ پر پہنچی تو حکومت نے احتجاجی مظاہرین کا پانی کی توپوں سے استقبال کیا۔

پی آئی اے ہیڈ آفس کا کارگو گیٹ میدان جنگ کا منظر پیش کر رہا تھا،پولیس اور رینجرز نے مظاہریں کو منشر کر نے کیلئے آنسو گیس کا استعمال بھی کیا اور ہوائی فائرنگ بھی کی گئی۔

مظاہرین کے درمیان جھڑپ میں فائرنگ سے پی آئی اے کے ملازم عنایت رضا گولی لگنے سے زخمی ہوئے، جنہیں طبی امداد کیلئے نجی اسپتال منتقل کیا گیا،جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگئے۔

پی آئی اے کی ممکنہ نجکاری کے خلاف پولیس اور مظاہرین کے احتجاج کی کوریج روکنے کی کوشش کی، سیکیورٹی اہلکاروں نے ڈیو ٹی پر مو جود صحا فیوں اور کیمرہ مین پر لا ٹھیاں برسائی۔

پولیس اورقانون نافذ کرنے والے اداروں کی ہوائی فائرنگ سےچند ملازمین رخمی ہوگئے اور ان میں سے ایک رخمی جان کی بازی ہار گیا، جبکہ پولیس نے جوائنٹ ایکشن کمیٹی اور پپلزیونٹی کےعہدیداران کو حراست میں لےلیا۔


دوسری جانب ڈی آئی جی ایسٹ کا کہنا تھا کہ پولیس اوررینجرزکو ہدایت تھی کہ سختی نہیں کرنی، پولیس کی جانب سے مظاہرین پر فائرنگ نہیں کی گئی۔

رینجرز ترجمان کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں بھی کہا گیا ہے کہ رینجرز کی جانب سے فائرنگ نہیں کی گئی، پولیس اور رینجرز اہلکاروں کی جانب سے فائرنگ نہیں کی گئی تو فائرنگ کس نے کی۔

ترجمان پی آئی اے دانیا گیلانی کا کہنا ہے کہ ملک بھر میں قومی ایئر لائن کا فلائٹ آپریشن معمول کے مطابق جاری ہے۔ پرامید ہیں تمام فلائٹس مقررہ وقت پر روانہ ہوں گی۔

پی آئی اے کی نجکاری کے خلاف احتجاجی مظاہرے کے دوران زخمی ہونے والے گیارہ افراد کو جناح اسپتال منتقل کردیا گیاجبکہ ایک زخمی آغاخان اسپتال پہنچنے سے پہلے دم توڑگیا ۔


Two dead as PIA workers clash with law enforcers by arynews

جناح اسپتال کی جوائنٹ ایگزیکیٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر سیمی جمالی کے مطابق ایمرجنسی آپریشن تھیٹر میں دوران علاج پچاس سالہ سلیم اکبردم توڑ گئے ۔

جبکہ فیصل کو آپریشن تھیٹر میں طبی امداد دی گئی ، دیگر زخمیوں میں 55 سالہ ہاشم رضا، 40 سالہ زبیر، 30 شفیق دلشاد ، 45 سالہ ارشد حسین جعفری ، 45 سالہ رفیق حسین، 40 سالہ رضوان حسن، 32 سالہ نادر، اور 35 سالہ امجد اقبال کو جناح اسپتال میں طبی امداد دی گئی ۔


PIA employees and media dealt with in the same… by arynews

اس کے علاوہ نجی ٹی وی کے ایک کیمرہ مین کو بھی طبی امداد دیکر اسپتال سے ڈسچارج کردیا گیا ، گلشن اقبال میں واقع کراچی کے نجی اسپتال میں پی آئی اے کے ایک ملازم عنایت رضا بھی دوران علاج دم توڑ گئے تھے ، گلشن اقبال کے نجی اسپتال میں مجموعی طور پر چار زخمیوں کو لایا گیا تھا ، لیاقت نیشنل اسپتال میں بھی تین زخمیوں کو طبی امداد دی گئی تھی۔

واضح رہے کہ ملتان میں بھی احتجاجی ملازمین نے وزیر ا عظم اور ائیر لیگ کے پوسٹرز پھاڑ دیئے اور اپنا احتجاج ریکارڈ کروایا جبکہ فیصل آباد میں بھی پی آئی اے دفاتراحتجاج کےطورپربندکردیےگئے۔

 

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں