سال 2025ء تک پاکستان میں‌ پانی کی کمی ہوسکتی ہے، ماہرین water shortage pakistan
The news is by your side.

Advertisement

سال 2025ء تک پاکستان میں‌ پانی کی کمی ہوسکتی ہے، ماہرین

کراچی: ماہرین زراعت نے کہا ہے کہ 2025ء میں پاکستان کو پانی کی کمی کا سامنا ہوسکتا ہے، حکومت پانی کے بے دریغ استعمال کو روکنے اور پانی کے ذخائر بڑھانے پر توجہ دے۔

نیسلے پاکستان کے تحت پانی کی افادیت اور اسے محفوظ کرنے کے حوالے سے واٹر پلان فور پاکستان کے نام سے سیمینار کا انعقاد ہوا جس میں مستقبل میں پاکستان کو پانی کی کمی اور اسے درپیش چیلنجز کا سامنا اور زراعت میں پانی کے بے دریغ استعمال کے حوالے سے بات کی گئی۔

شرکاء نے کہا کہ جس طرح پانی کا استعمال ہورہا ہے اس طرح 2025ء میں پاکستان کو پانی کی کمی کا سامنا ہوسکتا ہے۔

ڈرپ ایری گیشن کے ذریعے پانی کو بچانے کا کام جاری ہے، ایم ڈی نیسلے

اس موقع پر نیسلے پاکستان کے ایم ڈی برونو اولیر ہویک کا کہنا تھا کہ 2018ء تک ہم ملک میں پینے کے صاف پانی کے 7 سینٹر تک بنالیں گے اور 2017ء کے آخر تک ڈرپ ایری گیشن کے ذریعے پانی کو بچانے کے لیے کام جاری ہے۔

پانی ذخیرہ کرنے کے لیے اقدامات کرنے ہوں گے، کیپٹن (ر) محمود

ماہر زراعت کیپٹن (ر) محمد محمود نے کہا کہ پاکستان کو 2025ء میں پانی کی کمی کا سامنا ہوگا جس کے لیے بڑے ڈیم اور پانی ذخیرہ کرنے کے لیے اہم اقدامات کرنے ہوں گے۔

کیپٹن (ر) محمد محمود نے کہا کہ بڑے ڈیم نہ بننے کے باعث پانی کو ذخیرہ کرنے کی صلاحیت کم ہورہی ہے پاکستان میں صرف 30 دن کا پانی اسٹور کیا جا سکتا ہے جبکہ بھارت میں 200 اور امریکا میں 900 دن کا پانی ذخیرہ کیا جاتا ہے۔

محمد محمود کا مزید کہنا تھا کہ بڑے ڈیموں کے ساتھ پانی کے چھوٹے اسٹوریج ریزر وائز بنانے کی ضرورت ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں