The news is by your side.

Advertisement

سندھ میں پانی کی قلت شدت اختیار کرگئی

کراچی : سندھ میں پانی قلت شدت اختیار کرگئی، صوبائی حکومت نے پانی کی قلت کے باعث صوبے میں کی فصلیں متاثر ہونے کا خدشہ ظاہر کردیا۔

اس حوالے سے مشیر زراعت منظور وسان نے کہا ہے کہ ارسا، پنجاب سندھ کا پانی بند کرکے ریگستان بنانا چاہتے ہیں، ارسا کی مدد سے پنجاب لفٹ مشینوں کے ذریعے30 ہزار کیوسک پانی چوری کررہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ارسا کی نااہلی سے سندھ کو اس وقت53فیصد پانی کی قلت کاسامنا ہے، کینجھر جھیل میں پانی کی سطح کافی حد تک کم ہونے لگی ہے۔

سندھ میں پانی کی قلت شدت اختیار کرگئی

صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ چشمہ اور تونسہ بیراج پر پانی کی سطح میں40ہزار کیوسک کمی ہوگئی، پانی نہ ہونے سے سندھ میں کپاس اور گنے کی فصل جل چکی ہے۔

منظوروسان نے کہا کہ زرعی پانی کی عدم فراہمی کے باعث سندھ میں زیادہ تر فصلیں خراب ہوچکی ہیں،
لوگوں کے پاس اپنے مال مویشیوں کیلئے بھی پانی دستیاب نہیں ہے۔

سندھ میں زرعی پانی کی قلت شدت اختیار کرگئی، خریف کی فصلیں متاثر ہونے کا خدشہ

مزید پڑھیں : سندھ میں پانی چوری روکنے کیلئے صوبائی حکومت کا اہم فیصلہ

مشیر زراعت نے وزیراعظم شہباز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ سندھ کے حصے کا پانی چوری ہونے کا نوٹس لے کر فوری کارروائی کریں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں