The news is by your side.

Advertisement

ہم چاہتے ہیں کہ مقبوضہ کشمیر بھی آزاد ہو، وزیراعظم عمران خان

وزیراعظم عمران خان کا آزاد کشمیر کے لوگوں کو ہیلتھ انشورنس اور بنا سود قرضوں کی فراہمی کا اعلان

مظفرآباد : وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ‘لا الہ الاللہ ایک پورا نظریہ ہے, پاکستان اور کشمیر کا رشتہ لا الہ الاللہ کا ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ مقبوضہ کشمیر بھی آزاد ہو’۔

ان خیالات کا اظہار سربراہ پاکستان تحریک انصاف و وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کشمیری انتخابات کے سلسلے میں منعقدہ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کشمیریوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ لا الہ الاللہ ایک پورا نظریہ ہے اور قوم ایک نظریے سے بنتی ہے۔

‘پاکستان اور کشمیر کا رشتہ لا الہ الاللہ کا ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ مقبوضہ کشمیر بھی آزاد ہو’۔

عمران خان نے کشمیری عوام کو خوشخبری سناتے ہوئے کہا کہ رواں برس ے آخر تک سارے آزاد کشمیر کے لوگوں کو ہیلتھ انشورنس دیں گے، ہیلتھ انشورنس کسی بھی غریب خاندان کےلیے ایک بڑی نعمت ہے۔

انہوں نے کمزور طبقوں کو آسان اقساط پر قرضے دینے کی نوید سنائی اور بتایا کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ بینک ملازمین اور مزدوروں کو قرضہ دیں گے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ 40 فیصد خاندانوں کو بغیر سود کے قرضے دیئے جائیں گے ، جس سے یہ خاندان اپنا کاروبار شروع کرسکیں گے اور خواتین کو ٹیکنیکل ایجوکیشن دی جائے گی جس کے بعد وہ گھر بیٹھیں پیسے بناسکتی ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کو پیغام دیتے ہوئے کہا کہ پوری دنیا کشمیریوں کی قربانیوں کی معترف ہے، ہم آپ پر فخر کرتے ہیں۔

مودی نے 5 اگست کو مقبوضہ وادی کے لوگوں پر مزید ظلم شروع کیا، دنیا سمجھ رہی تھی کہ مقبوضہ وادی کے لوگ گھٹنے ٹیک دیں گے مگر انکا جذبہ ایمانی تھا۔

وزیراعظم نے ایک مرتبہ پھر پوری دنیا میں کشمیریوں کا سفیر بننے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ پوری دنیا میں کشمیر کا سفیر بن کر نکلوں گا اور آپ کی بات کروں گا۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت میں تمام اقلیت کے آر ایس ایس کے نظریے سے خطرہ ہے، سب سے زیادہ خطرہ خود بھارت کو ہے۔

اپوزیشن پر تنقید

عمران خان نے اپوزیشن جماعتوں کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ جب پیسہ اور کاروبار پاکستان میں نہیں وہ کبھی عوام کیلئے اسٹینڈ نہیں لے سکتا اگر میرا بھی کاروبار باہر ہوتا تو میں بھی امریکا کو ایب سلوٹلی ناٹ نہیں کہہ پاتا۔

سربراہ پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ انصاف کے نظام کے بغیر کوئی قوم اوپر نہیں جاسکتی، یہ کسی مہذب معاشرے میں نہیں ہوتا کہ معصوم شکل بناکر علاج کےلیے بیرون ملک نکل جائیں، ایسا شخص جسے سپریم کورٹ نے سزا سنائی ہو وہ جعلی سرٹیفکیٹ بناکر برطانیہ روانہ ہوگیا، ایسا تو کسی ملک میں نہیں ہوتا۔

عمران خان نے اپنے خطاب میں بتایا کہ ہم طاقتور کو قانون کے نیچے لانے کی کوشش کررہے ہیں کیوں کہ جب تک قانون کی حکمرانی نہ ہو ملک خوشحال نہیں ہوسکتا۔

انہوں نے بتایا کہ لا الہ الا اللہ انسان کو غیرت دیتا ہے کمزور قوم کو عظیم قوم بنا دیتا ہے، مدینے کے لوگ غریب تھے مگر خود دار تھےکسی کے سامنے جھکتے نہیں تھے، یہ پاکستان جو بننے جارہا ہے یہ دوسروں کو امداد دیا کرے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں