The news is by your side.

Advertisement

حمزہ شہباز نے پیشی کے دوران کیا کہا؟ ڈی جی نیب نے بتا دیا

لاہور: حمزہ شہباز شریف کی جانب سے قومی احتساب بیورو پر الزامات کے بعد ڈائریکٹر جنرل نیب پیشی کے دوران ہونے والی حمزہ شہباز کی گفتگو سامنے لے آئے۔

تفصیلات کے مطابق ڈی جی نیب شہزاد سلیم نے بتایا کہ حمزہ شہباز نے دوران تفتیش کہا میں خاندان کے افراد کے بارے میں جواب نہیں دوں گا۔

ڈی جی نیب شہزاد سلیم کا کہنا تھا کہ حمزہ شہباز نے کہا ’والدہ سے متعلق سوالات نیب خود اُن سے کرے۔‘

نیب کے ڈائریکٹر جنرل نے کہا کہ حمزہ کو 12 اپریل کو نصرت شہباز سے متعلق ریکارڈ لانے کی ہدایت کی گئی تھی، لیکن انھوں نے ایسا کوئی بھی ریکارڈ جمع کرانے سے معذرت کی۔

یہ بھی پڑھیں:  حمزہ شہباز نیب پر برس پڑے، میری بہنوں اور بیمار والدہ کو بھی نوٹس بھیج دیا

خیال رہے کہ لیگی رہنما حمزہ شہباز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ کل تین گھنٹے وہ نیب میں بیٹھ کر آئے، اب پھر بلایا جا رہا ہے، اور بہنوں اور بیمار والدہ کو بھی نوٹس بھیج دیا گیا، کیا مہذب معاشرے میں ماں بیٹیوں کو نوٹس بھیجے جاتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  نیب نے حمزہ شہباز کے الزامات مسترد کر دیے، حمزہ کو بھیجا گیا نوٹس بھی منظر عام پر آگیا

انھوں نے ڈی جی نیب پر الزام لگایا اور کہا ’ڈی جی نیب لاہور نے کہا آپ نے ضمانت کی درخواست کیوں دی، ہم تو آپ کو گرفتار نہیں کرنا چاہتے، آپ حکومت سیٹلمنٹ کرلیں، آپ کو بار بار بلانا اچھا نہیں لگتا، حکومت سے ڈیل کیوں نہیں کر لیتے۔‘

تاہم قومی احتساب بیورو (نیب) نے لیگی رہنما حمزہ شہباز کے تمام الزامات مسترد کر دیے، ترجمان نیب نے کہا کہ حمزہ شہباز کے الزامات کی تردید اور مذمت کرتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں