The news is by your side.

Advertisement

کون سی خوراک ڈپریشن کا علاج کر سکتی ہے؟ جانئے

لیکن کیا آپ کو معلوم ہے کہ غذائیت سے بھرپور خوراک آپ کی ذہنی صحت کا بھی تحفظ کرتی ہے؟، ایک صحت مند جسم کے لیے اچھی خوراک بہت ضروری بلکہ اہم ترین چیزوں میں سے ایک ہے۔ پھلوں، سبزیوں، دلیے، پھلیوں، کم چکنائی کے حامل دودھ کی مصنوعات اور بغیر چربی کے گوشت پر مشتمل خوراک جسمانی صحت کو درپیش کئی خطرات کو گھٹانے میں مدد دیتی ہے۔

یہ کہنا آسان نہیں کہ کھانے یا پینے کی کون سی چیز آپ کے ڈپریشن کا علاج کر سکتی ہے، لیکن یہ ضرور کہا جا سکتا ہے کہ مجموعی طور پر غذائیت سے بھرپور اچھی خوراک آپ کی ذہنی صحت کے لیے بھی مفید ہے، آپ کے دماغ کو بہترین حالت میں
رکھنے کے لیے ان چیزوں کا استعمال ضروری ہیں۔

حیاتین اور معدنیات
حیاتین اور معدنیات آپ کی دماغی صحت میں کلیدی کردار ادا کرتے ہیں، خاص طور پر حیاتین یعنی وٹامنز آپ کے دماغ کے لیے اہم ہیں وٹامن سی ، وٹامن ڈی اور بی وٹامنز، اس کے علاوہ بھرپور انداز میں کام کرنے کے لیے دماغ کو ان معدنیات (منرلز) کی ضرورت بھی ہوتی ہے: میگنیشیم، سیلینیم اور زنک وغیرہ۔

نشاستہ
نشاستہ یعنی کاربوہائیڈریٹس آپ کے دماغ کو تقویت پہنچانے کے کچھ کام انجام دیتا ہے، بنیادی طور پر آپ کا دماغ توانائی کے لیے گلوکوز پر انحصار کرتا ہے، شکر آپ کی خوراک میں موجود نشاستہ دار غذائیت سے ہی نکلتی ہے، اس کے علاوہ نشاستہ ہی آپ کو خوشی کا احساس دینے والے نیوروٹرانسمٹر سیروٹونن کی پیداوار بڑھانے میں بھی مدد دیتا ہے۔

آپ کا جسم مصنوعی طور پر بنائی گئی میٹھی چیزوں میں پائے جانے والے عام نشاستے کے مقابلے میں ان قدرتی اشیاء میں موجود نشاستے کو زیادہ آہستگی سے گلوکوز میں تبدیل کرتا ہے، یوں مرکب نشاستہ آپ کو دماغ کو ایندھن فراہم کرنے کا ایک زیادہ مضبوط اور مستقل طریقہ دیتا ہے۔

ضروری غذائیت
جس طرح کھانے پینے کی اشیا جسم کے دیگر اعضا پر اثر انداز ہوتی ہیں، اسی طرح دماغ پر ان پر مختلف ردعمل دکھاتا ہے، اسے کچھ حیاتین، معدنیات اور دوسری غذائیت سے بھرپور اشیاء کی ضرورت ہوتی ہے۔،اگر آپ کا دماغ ضروری غذائیت سے محروم ہو تو یہ درست کام نہیں کر سکتا، یوں خدشہ ہے کہ آپ کو ذہنی صحت کے مسائل کا سامنا کرنا پڑجائے۔

امینو ایسڈز

امینو ایسڈز دراصل لحمیات یعنی پروٹینز ہیں، یہ آپ کے دماغ میں نیوروٹرانسمٹرز کی پیداوار کے لیے ضروری ہیں، یہ کیمیائی پیامبر کی ایک قسم ہیں جو آپ کے اعصابی خلیات کے درمیان سگنلز لے جاتے ہیں، مثال کے طور پر سیروٹونن ہی کو لے لیں جو ایک نیوروٹرانسمٹر ہے جو خوشی کا احساس دیتا ہے۔ یہ امینو ایسڈ ٹرپٹافون سے بنتا ہے۔ ڈوپامائن بھی ایک نیوروٹرانسمٹر ہے جو آپ کو خود کو مستعد اور آمادہ محسوس کرنے میں مدد دیتا ہے، یہ امینو ایسڈ فلالائن سے بنتا ہے، آپ کا جسم آپ کی خوراک سے ہی یہ امینو ایسڈز جذب کرتا ہے۔

فیٹی ایسڈز

فیٹی ایسڈز بھی آپ کی دماغی صحت کے لیے بہت اہم ہیں، دماغ کا بڑا حصہ چکنائی سے بنا ہوتا ہے، جس میں اومیگا تھری اور اومیگا سکس فیٹی ایسڈز شامل ہیں، آپ کا جسم خود سے یہ فیٹی ایسڈز نہیں بنا سکتا بلکہ یہ آپ کی استعمال کردہ خوراک سے ہی انہیں جذب کرتا ہے۔

پانی

دماغ کے لیے آخری اہم چیز پانی ہے، ہمارے دماغ کا سب سے بڑا حصہ پانی پر ہی مشتمل ہے، پانی میں معمولی سی کمی بھی آپ کو ذہنی صحت کے مسائل سے دوچار کر سکتی ہے، جیسا کہ چڑچڑا پن اور توجہ کے ارتکاز میں کمی وغیرہ۔

کون سی خوراک استعمال کریں؟

وٹامن سی: ترنجی پھل، ہری سبزیاں اور دیگر پھل اور سبزیاں

وٹامن ڈی: مچھلی، جھینگے، انڈے اور دودھ، پھلوں کے رس اور اناج سے بنی مصنوعات

بی وٹامنز: سرخ گوشت، مچھلی، انڈے، دودھ کی مصنوعات، دلیہ اور پتوں والی ہری سبزیاں

میگنیشیم، سیلینیم اور زنک: خشک میوے، بیج، دلیہ، ہری سبزیاں اور مچھلی

کاربوہائیڈریٹس: بھوسی والی روٹیاں اور دلیہ، لال چاول، باجرا، پھلیاں اور نشاستہ دار سبزیاں ، آلو، مکئی،مٹر

بغیر چربی کا سرخ گوشت، مرغی کا گوشت، انڈے اور پھلیاں

بغیر چربی کا سرخ گوشت، مرغی، انڈے، دودھ کی مصنوعات، سویابین اور بیج

اومیگا -3فیٹی ایسڈز: مچھلیاں، اخروٹ، گوبھی، پالک، گرما، کنولا اور السی کا تیل

اومیگا -6فیٹی ایسڈز:مرغی، انڈے، اناج اور سبزیوں کا تیل

 

Comments

یہ بھی پڑھیں