The news is by your side.

Advertisement

ہتھیار ڈالنے والے یوکرینی فوجیوں کا مستقبل کیا ہوگا؟

ماریوپول کے ازوستال پلانٹ میں ہتھیار ڈالنے والے یوکرین کے فوجیوں کے مستقبل کا فیصلہ عدالت کرے گی۔

ڈی پی آر کے رہنما ڈینس پوشیلین نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ عدالت یوکرین کے عسکریت پسندوں کے مستقبل کا فیصلہ سنائے گی جنہوں نے ماریوپول کے ازوستال پلانٹ میں ہتھیار ڈال دیے تھے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ڈینس پوشیلین نے کہا کہ جنگی مجرموں اور قوم پرستوں کا تعلق ہے اگر وہ ہتھیار ڈال دیں تو ان کی قسمت کا فیصلہ عدالت کو کرنا چاہیے۔

پوشیلین نے کہا کہ کچھ لوگوں کے جذبات سے قطع نظر میں نے مختلف آرا سنی لیکن کوئی مخالف ہتھیار ڈال دیتا ہے تو اس کے مستقبل کا فیصلہ عدالت کرتی ہے تاہم ہتھیار ڈالنے والا نازی مجرم ہے تو کورٹ مارشل کے ذریعے اسے سزا دی جائے گی۔

واضح رہے کہ روسی تحقیقاتی کمیٹی کے تفتیش کار ہتھیار ڈالنے والے ان عسکریت پسندوں سے پوچھ گچھ کرینگے جو ماریوپول میں ازوستال پلانٹ میں چھپے ہوئے تھے۔

ایجنسی نے بتایا کہ قوم پرستوں کی شناخت قائم کرنے، شہریوں کے خلاف ہونے والے جرائم میں ان کے ملوث ہونے کی جانچ کرنے اور پوچھ گچھ کے دوران حاصل کردہ معلومات کا دوسرے مجرمانہ مقدمات کے ڈیٹا سے موازنہ کرنے کے بعد ان کی قسمت کا فیصلہ کیا جائے گا۔

گزشتہ روز روسی وزارت دفاع کے ترجمان ایگور کوناشینکوف نے بتایا تھا کہ 16 مئی سے اب تک 959 عسکریت پسندوں نے ہتھیار ڈال دیے ہیں جن میں 80 زخمی بھی شامل ہیں جن میں سے 51 دونیسک عوامی جمہوریہ کے نووازوسک میں اسپتال میں داخل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں