The news is by your side.

Advertisement

ابھینندن کی واپسی کے وقت ساتھ موجود خاتون کون تھیں؟

لاہور: بھارت کے گرفتار ونگ کمانڈر ابھینندن کو جذبہ خیر سگالی کے طور پر کل رات واپس ان کے وطن بھیجا جا چکا ہے، اس موقع پر دونوں ممالک سمیت دنیا بھر کے میڈیا نے بھارتی پائلٹ کی حوالگی کی کوریج کی۔

ایسے میں ابھینندن کے ساتھ ایک خاتون کی موجودگی نے کئی ذہنوں میں الجھن پیدا کردی کیونکہ ان کی شناخت واضح نہیں تھی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر لوگوں کی بڑی تعداد نے سوال کیا کہ ابھینندن کے ساتھ موجود خاتون کون ہیں۔ بعض افراد کا خیال تھا کہ یہ ونگ کمانڈر ابھینندن کی اہلیہ ہیں جنہیں اس موقع کے لیے پاکستان آنے دیا گیا۔

تاہم ان تمام اندازوں میں کوئی صداقت نہیں۔ ابھینندن کی حوالگی کے وقت پاکستانی حکام کے ساتھ موجود خاتون پاکستانی دفتر خارجہ میں ڈائریکٹر انڈیا ڈویژن ڈاکٹر فریحہ بگٹی تھیں۔

ڈاکٹر فریحہ بگٹی اہم عہدے کی حامل ہونے کی وجہ سے گزشتہ کچھ عرصے سے کافی فعال ہیں۔ ڈاکٹر فریحہ بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کیس میں پاکستان کی جانب سے عالمی عدالت انصاف میں جواب جمع کروا چکی ہیں۔

سنہ 2017 میں کلبھوشن کی اس کے اہلخانہ سے ملاقات کے موقع پر بھی ڈاکٹر فریحہ موجود تھیں جنہوں نے بھارتی جاسوس کے اہلخانہ کی رہنمائی کی تھی۔

یاد رہے کہ بھارتی پائلٹ ابھینندن کو 27 فروری کو گرفتار کیا گیا تھا جب وہ اپنا طیارہ لے کر تباہی کے ارادے سے پاکستانی حدود میں داخل ہوا، ایسے میں پاک فوج نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے ابھینندن کے طیارے سمیت 2 طیاروں کو مار گرایا۔

طیارہ گرنے کے بعد ابھینندن کو مقامی افراد نے تشدد کا نشانہ بھی بنایا تاہم پاک فوج نے اسے بچا کر اپنی تحویل میں لے لیا، گزشتہ رات بھارتی پائلٹ کو خیر سگالی کے اظہار کے طور پر بھارت کے حوالے کردیا گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں