The news is by your side.

Advertisement

موسمِ‌ گرما میں ہاتھ پیروں میں سوجن کیوں ہوجاتی ہے، اسے ختم کیسے کیا جائے؟

موسم گرما اور بالخصوص ہیٹ ویو میں بیشتر افراد کو ہاتھوں اور پیروں میں سوجن کی شکایت ہوتی ہے جس کی وجہ سے انہیں جسم میں دکھن بھی محسوس ہوتی ہے۔

عام طور پر شدید گرمی یا ہیٹ ویو میں جہاں بعض شہریوں کو سردرد ، سستی سمیت دیگر بیماریوں کی شکایت ہوتی ہے وہیں ہاتھوں پیروں میں سوجن کے معاملات پیش آتے ہیں۔

طبی ماہرین کے مطابق گرمی کے دنوں میں ہاتھوں پیروں میں سوجن ہونا کسی بیماری کی علامت نہیں کیونکہ جب موسم گرم ہورہا ہوتا ہے کہ انسان کے اندرونی جسم میں  قدرتی طور پر  بڑی تبدیلیاں ہوتی ہیں۔

ان تبدیلیوں کی وجہ سے ہی  بہت زیادہ پسینہ آنا، سردرد اور پانی کی شدید کمی ہوجاتی ہے۔

برطانوی ماہرین نے شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ رواں ہفتے درجہ حرارت 37 ڈگری سینٹی گریڈ سے تجاوز کرسکتا ہے جس کی وجہ سے کچھ علاقوں میں ہیٹ ویو کا خطرہ بھی ہے۔

ہاتھوں پیروں میں سوجن کیوں ہوتی ہے؟

نیشنل ہیلتھ سروس کے ماہرین نے وضاحت کی کہ ’موسمِ گرما کا آغاز ہوتے ہی عام طور پر خواتین کے ہاتھوں اور پیروں میں سوجن آجاتی ہے‘۔

ماہرین کے مطابق ’ہاتھوں اور پیروں میں سوجن اس وقت ہوتی ہے جب جلد کو خون کی فراہمی بڑھ جاتی ہے، کیونکہ یہ جلد انسان کو گرمی سے تحفظ فراہم کرتی ہے، اگر آپ کے ہاتھوں اور پیروں میں سوجن ہوجائے تو پریشانی کی کوئی بات نہیں کیونکہ یہ خود بہ خود ختم ہوجاتی ہے‘۔

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ ’سوجن کا تعلق جسم نے نکلنے والی حرارت سے ہے اور جن لوگوں کو یہ شکایت ہوتی ہے انہیں پانی کی کمی کی شکایت نہیں ہوتی‘۔

ہاتھوں اور پیروں سے سوجن ختم کرنے کا طریقہ

ٹھنڈے پانی میں پیر ڈال کے بیٹھ جائیں

ہلکا ٹھنڈا پانی پیئں

ایسے جوتے پہنیں جن کے پہننے کے بعد پاؤں کھلا ہوا ہو۔

چلتے وقت پیر اٹھا کر چلیں

سپورٹ جرابیں پہنیں

Comments

یہ بھی پڑھیں