The news is by your side.

دنیا پر حکمرانی کی دوڑ میں خواتین مردوں سے آگے

کراچی : افریقا ہو یا امریکا،برطانیہ ہو یا یورپی ممالک خواتین اہم عہدوں کی دوڑمیں مردوں کو پیچھے چھوڑتی جارہی ہیں۔

دنیا کے بڑے ممالک پرخواتین کی حکمرانی چلے گی، مارگیٹ تھیچر کے بعد تھريسامے برطانيہ کی دوسری خاتون وزیراعظم بن گئیں،اور وہ بڑے پیمانے پراپنی کابینہ میں خواتین کو اعلیٰ عہدوں پر دیکھنا چاہیں گی۔

uk-1

امریکا پر حکمرانی کیلئے ہیلری کلنٹن مضبوط امیدوار ہیں اور ہلیری کلنٹن کے منتخب ہونے کی صورت میں امریکہ ان 60 ممالک میں شامل ہوجائے گا ، جہاں خواتین اس منصب پر فائز رہ چکی ہے۔

haliry

اقوام متحدہ کی آئندہ جنرل سيکرٹری کے عہدے کیلئے کڑا مقابلہ چھ خواتین کے درمیان ہے، خواتین امیدواروں کا تعلق بلغاریہ، کروشیا، مولدووا اور نیوزی لینڈ سے ہے، امید کی جارہی ہے کہ اقوام متحدہ کي آئندہ جنرل سيکرٹری بھی ايک خاتون ہی ہوں۔

un

آرینہ بوکووا جن کا تعلق بلغاریہ سے ہے اور وہ بلغاریہ کے اقوام متحدہ کی ثقافتی تنظیم یونیسکو کی ڈائریکٹر جنرل ہے، ویسنا پیوزک  کروشیا کی سابق وزیر خارجہ تھی، ناتالیا گھرمن مولدووا کی نائب وزیراعظم رہ چکی ہے اور وزیر برائے اتحاد یورپی ممالک ہیں، ہیلن کلارک نیوزی لینڈ کی سابق وزیر اعظم رہ چکی ہے۔

دنیا بھر کے اہم سرکاری عہدوں پر بھی خواتین فائز ہیں، جس میں آئی ایم یف کی سربراہ کرسٹین لگارڈ اور جرمنی کی چانسلر انجیلا مارکل کا نام شامل ہے۔

mercle

افریقا میں تین ممالک کی سربراہ خواتین ہیں۔

ایشیا میں بنگلہ دیش میں حسینہ واجد کی حکمرانی ہے، حسینہ واجد تیسری مرتبہ وزیراعظم بنیں۔

hasieena

benezir

بھارت میں اندرا گاندھی اور پاکستان میں بے نظیر بھٹو ملکی سربراہ کی حیثیت سے اپنانام تاریخ میں لکھواچکیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں