The news is by your side.

Advertisement

بحرین اور ریاض کے مابین’تجارتی پُل‘پر اگلے 6 ماہ میں کام شروع ہوگا

ریاض/منامہ : بحرین میں تعینات سعودی سفیر نے کہا ہے کہ اگلے 6 ماہ میں بحرین اور سعودیہ کے مابین تجاری پل منصوبے کے لیے ٹینڈر کا آغاز کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب اور بحرین کے مابین 4 ارب ڈالر کی لاگت سے تعمیر کیے جانے والے تجاری پل منصوبے پر اگلے میں 6 ماہ کام شروع کردیا جائے گا جس پر تین الگ الگ ٹریک ہوں گے۔

عرب میڈیا کا کہنا ہے کہ ایک ٹریک گاڑیوں کے لیے، دوسرا ٹریک مال بردار گاڑیوں کے لیے جبکہ تیسرا ٹریک مسافر ٹرینوں کے لیے مختص ہوگا۔

بحرین میں تعینات سعودی سفیر ڈاکٹر عبداللہ آل شیخ نے کہا تھا کہ تجاری رابطہ پل منصوبے کے لیے اگلے 6 ماہ ٹینڈر کھولے جائیں گے منصوبے کے حوالے سے فزیبلیٹی رپورٹ تیار کرلی گئی ہے، امید ہے کہ سنہ 2021 تک منصوبہ مکمل ہوجائے گا جس سے دوسری عرب ریاستوں بھی معاشی فوائد حاصل ہوں گے۔

سعودی سفیر کا کہنا تھا کہ تجارتی پل کے منصوبے پر بی او ٹی سسٹم کے ذریعے عمل کیا جائے گا جبکہ نگراں کمپنی منصوبے کی تکمیل اور کچھ عرصے کے لیے انتظامات کے اخراجات ادا کرے گی۔

عرب میڈیا کے مطابق منصوبہ مکمل ہونے کے بعد نگرٓاں کمپنی پہلے اپنے اخراجات پورے کرے گی اور منافع حاصل لے گی پھر تجارتی پل کو بحرین اور سعودی عرب کے حوالے کیا جائے گا۔

حال ہی میں بحرین کے وزیر مواصلات وٹیلی کمیونیکشن کمال بن احمد محمد نے اپنے سعودی ہم منصب نبیل بن محمد العامودی سے منامہ میں ملاقات کی تھی۔ اس ملاقات میں بھی دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی اور سیاسی رابطہ پل کے منصوبے پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں