site
stats
سائنس اور ٹیکنالوجی

دنیا کے سب سے بڑے ہوائی جہاز کی کامیاب پرواز

کیلیفورنیا : دنیا کے سب سے بڑے اور طاقتور ہوائی جہاز نے اپنی آزمائش کا ایک اور مرحلہ کامیابی سے طے کرلیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسٹریٹولانچ نامی طیارے کو انتہائی بلند پرواز کےلیے تیار کیا گیا ہے، اس کے اوپرراکٹ رکھ کر اسے فضا میں لانچ کیا جائے گا جہاں سے راکٹ سیٹلائٹ اور دیگر سامان کو خلا میں لے کر جاسکے گا۔

اس طرح راکٹ کے ایندھن اور لاگت میں کمی آئے گی کیونکہ زمین سے راکٹ کی پرواز میں بہت ایندھن درکار ہوتا ہے اور اس پر اخراجات بھی زیادہ ہوتے ہیں۔

اس طیارے کا تمام تر سسٹم ناسا نے ٹیسٹ کیا ہے، طیارے کے دوڑنے، مڑنے اور بریک لگانے کا سارا عمل پر کھا گیا ہے جبکہ اگلے مرحلے کمیونی کیشن نظام کی جانچ ہونی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اب تک طیارہ اچھی طرح کام کررہا ہے۔

طیارے کے ٹیسٹ کا مقصد یہ تھا تاکہ طیارے کے چلنے اور روکنے کی رفتار کو جانچا جا سکے۔

اپنے بازوؤں کے سائز کے لحاظ سے یہ دنیا کا سب سے بڑا ہوائی جہاز ہے، جس میں پریٹ اینڈ وٹنی کمپنی کے 6 عدد ٹربوفین انجن نصب ہیں، آزمائشی طور پر ان 6 انجنوں کو بھی کھولا گیا ہے۔

 

خیال رہے رواں سال جون میں مائیکروسافٹ کے شریک بانی پال ایلن نے دنیا کے سب سے بڑے ہوائی جہاز کی رونمائی کی تھی۔

یلن کی ایرو سپیس کمپنی سٹریٹولانچ سسٹم نے اس ہوائی جہاز کو تیار کیا ہے۔ اس کی سب سے خاص بات اس کا دیوقامت سائز ہے، اس طیارے کو دو بوئنگ 747 جہازوں کو جوڑ کر بنایا گیا ہے، اس کے 28پہیے ہیں جبکہ اس کو اڑانے کیلئے 747 جہاز کے چھ انجن استعمال کئے گئے ہیں۔

یہ دنیا کا پہلا واحد جہاز ہے کہ جس کے پروں کا پھیلاﺅ ایک بڑے فٹ بال سٹیڈیم کے برابر ہے، پروں کے 385فٹ پھیلاﺅ کے ساتھ اس ہوائی جہاز نے اینٹو نووف 225 کا ریکارڈ بھی توڑ دیا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top