The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف کے میڈیکل بورڈ کا 2 لائنوں کا جواب ناکافی ہے، یاسمین راشد

لاہور: وزیر صحت پنجاب یاسمین راشد نے کہا ہے کہ نوازشریف کے میڈیکل بورڈ کا 2 لائنوں کا جواب ناکافی ہے، میڈیکل بورڈ کا 2 لائنوں کا جواب وزارت داخلہ کو بھیجتے تو مذاق بنتا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں پریس کانفرس کرتے ہوئے صوبائی وزیر یاسمین راشد نے کہا کہ نوازشریف کی بیماری کی تشخیص ہوگئی ہے، ان کی شوگر کنٹرول نہیں ہو پا رہی ہے، نوازشریف کو اسٹیرائیڈزسمیت دیگر دوائیں دی جا رہی ہیں۔

یاسمین راشد نے کہا کہ نوازشریف نے بیرون ملک علاج کے لیے وزارت داخلہ کو درخواست دی، وزارت داخلہ کی جانب سے خط آیا میڈیکل بورڈ سے رائے لی جائے، وزارت داخلہ نے صوبائی حکومت سے میڈیکل بورڈ کی رپورٹ طلب کی ہے، نامکمل رپورٹ پر میڈیکل بورڈ سے سوال جواب پوچھے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کہا گیا کچھ ایسی بیماریاں ہیں جن کاعلاج پاکستان میں دستیاب نہیں ہے، میڈیکل بورڈ سے پوچھا بتائیں کون سی ایسی بیماریوں کاعلاج یہاں ممکن نہیں ہے۔

وزیر صحت پنجاب نے کہا کہ نوازشریف کے سرکاری میڈیکل بورڈ کا آج ایک اور اجلاس ہوگا، میڈیکل بورڈ کی تفصیلی رپورٹ آنے پر وزارت داخلہ کو بھجوائیں گے، میڈیکل بورڈ خودمختار ہے کسی بھی ممبر سے پوچھ لیں۔

انہوں نے کہا کہ نوازشریف ہائی پروفائل مریض ہیں، ان کی بیماری سے کبھی انکار نہیں کیا، ان کی بیماری کی ہسٹری بہت لمبی چوڑی ہے، نوازشریف کو لاحق امراض کی تفصیلات سے سب واقف ہیں، نوازشریف بیمار ہیں اس معاملے پر کوئی شک نہیں کیا جاسکتا۔

یاسمین راشد نے کہا کہ نوازشریف کے میڈیکل بورڈ کا 2 لائنوں کا جواب ناکافی ہے، میڈیکل بورڈ کا 2 لائنوں کا جواب وزارت داخلہ کو بھیجتے تو مذاق بنتا۔ انہوں نے کہا کہ مجھ پر کوئی دباؤ نہیں، ہمیشہ حقائق سے آگاہ کیا، میڈیکل بورڈ سے تفصیل مانگنا کوئی غلط بات نہیں ہے۔

وزیرصحت پنجاب نے کہا کہ نوازشریف کے پیٹ اسکین نہ ہونے کی وجہ شوگر کا کنٹرول نہ ہونا ہے، ڈاکٹرز رسک لینے کو تیار نہیں ہیں، بدقسمتی سے میڈیکل میں بہت ساری چیزوں کا فقدان ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں