The news is by your side.

Advertisement

آصف زرداری اور فریال تالپور کی 10دن کی حفاظتی ضمانت منظور

کراچی: سندھ ہائی کورٹ نے پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کی 10دن کی حفاظتی ضمانت منظور کرتے ہوئے نیب میں پیش ہونے اور 10 لاکھ کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں جعلی بینک اکاؤنٹس اور پارک لین اپارٹمنٹ کیس میں سابق صدر آصف زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کی درخواست ضمانت پر سماعت ہوئی، دونوں بہن بھائی وکلا اورجیالوں کےہمراہ سندھ ہائی کورٹ پہنچے۔

بعد ازاں، آصف زرداری اور فریال تالپور نے زرِ ضمانت کی رقم دس لاکھ روپے جمع کرا دیے، زرِ ضمانت جمع کراتے وقت آصف زرداری نے روایتی خوش گوار موڈ میں وکلا سے بات چیت کے دوران شعر بھی سنایا ’اب اداس پھرتے ہو سردیوں کی شاموں میں، اس طرح تو ہوتا اس طرح کے کاموں میں۔‘ شعر پر آصف زرداری کے شعر پر کمرۂ عدالت میں قہقہے گونج اٹھے۔

عدالت نے دلائل کے بعد آصف زرداری اور فریال تالپور کی 10دن کی حفاظتی ضمانت منظور کرتے ہوئے آصف زرداری کو تفتیش کے لئے نیب میں پیش ہونےکی ہدایت کردی اور 10لاکھ کے مچلکے جمع کرانے کا حکم بھی دیا۔

آصف زرداری اور فریال تالپور کی جانب سے ضمانت کی3درخواستیں دائرکی گئی تھیں، دو درخواستیں آصف زرداری کی جانب سے دائر کی گئیں۔

آصف زرداری نے جعلی بینک اکاؤنٹس اور پارک لین اپارٹمنٹ کیس میں درخواست ضمانت دائر کی جبکہ فریال تالپور کی جانب سے جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں ضمانت کے لیے درخواست دائر کی گئی تھی۔

ہم رول آف لا پر یقین رکھتے ہیں ، آصف زرداری کے وکیل


سماعت کے بعد آصف زرداری کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا آج آصف زرداری کی جانب سے 2 درخواستیں دائر کی تھیں ، آصف زرداری اور فریال تالپور کی ضمانت لی ہے ، آصف زرداری کو 20 مارچ کو اسلام آباد بلایا گیاہے ، ضمانت کیلئے 10 لاکھ کے مچلکے دیے ہیں۔

فاروق ایچ نائیک کا کہنا تھا کہ ہم رول آف لا پر یقین رکھتے ہیں، نیب اسلام آباد کی جانب سے ہمیں کوئی سوالنامہ نہیں ملا۔

مزید پڑھیں : آصف زرداری نے نیب میں طلبی کا نوٹس سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا

اس سے قبل سابق صدر آصف زرداری نے نیب میں طلبی کو سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا ، آصف زرداری نے درخواست میں موقف اختیار کیاتھا کہ نیب کے کال اپ نوٹس کو کالعدم قرار دیا جائے، نجی کمپنیوں کے لین دین کے معاملے پر نیب مداخلت نہیں کرسکتا، نیب کوگرفتار کرنے سے بھی روکاجائے۔

نیب کا مؤقف ہے دونوں باپ بیٹے پارک لین اسٹیٹ کمپنی کے پچیس پچیس فیصد شیئر ہولڈرز ہیں۔

یاد رہے نیب نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں آصف زرداری اور بلاول بھٹو کو کل پارک لین کرپشن معاملے پرطلب کررکھاہے۔

خیال رہے آج منی لانڈرنگ کیس کی اسلام آبادمنتقلی کے معاملے پر سندھ ہائی کورٹ نے مقدمے کا ریکارڈ طلب کرنے کی آصف زرداری کے وکیل کی درخواست مسترد کردی تھی، فاضل جج نے فاروق نائیک سے کہا سپریم کورٹ کے حکم پر آپ کیا کہیں گے؟ سپریم کورٹ کا فیصلہ واضح ہے، مزید کیا بچتا ہے؟

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں