site
stats
اہم ترین

اکبر بگٹی قتل کیس: پرویز مشرف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست منظور

کوئٹہ: انسدادِ دہشتگردی عدالت نے اکبر بگٹی قتل کیس میں سابق صدر پرویز مشرف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست منظور کرلی ہے۔

سابق وزیراعلیٰ بلوچستان نواب اکبر بگٹی قتل کے مقدمے کی سماعت انسدادِ دہشتگردی کی خصوصی عدالت کے جج آفتاب احمد لون نے کی، صدر پرویز مشرف کی مقدمے کے فیصلے تک عدالت میں پیشی سے حاضری سے استثنیٰ کی استدعا پر فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔

دوران سماعت سابق وفاقی وزیرِ داخلہ آفتاب شیرپاؤ اور سابق صوبائی وزیرِ داخلہ شعیب احمد نوشیروانی کی جانب سے مقدمے سے بریت کی درخواستوں پر وکلاء نے دلائل مکمل کئے، جمیل اکبر بگٹی کے وکیل نے فاضل وکلاء کے دلائل کی بھر پور مخالفت کی۔

دوران سماعت سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل نے اپنے موکل کیلئے تاحکم مقدمہ عدالت میں حاضری سے استثنیٰ کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ پرویز مشرف ایک مشہور شخصیت ہیں، ان کی حاضری کے بغیر بھی مقدمے کی پیروی کی جاسکتی ہے۔

عدالت نے سابق صدر پرویز مشرف کی وکیل کی استدعا پر فاضل وکلاء سے رائے لینے کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا جبکہ میڈیکل بورڈ کے سامنے پیش ہونے کے لئے پرویز مشرف کو سیکورٹی فراہم کرنے کیلئے سندھ حکومت کو ہدایت دیتے ہوئے سماعت 17مارچ تک کے لئے ملتوی کردی۔

گزشتہ سماعت میں عدالت نے پرویز مشرف کی حاضری سے ایک دن کے استثنیٰ کی درخواست منظور کرتے ہوئے سماعت 25 فروری تک ملتوی کردی تھی، سماعت کے دوران سابق وفاقی وزیرِداخلہ آفتاب شیرپاؤ اور سابق صوبائی وزیرِداخلہ میر شعیب نوشیروانی پیش ہوئے تاہم سابق صدر پرویز مشرف ایک مرتبہ پھر حاضر نہیں ہوئے۔

سماعت کے دوران وکیل استغاثہ نے سابق صدر کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست پر کہا کہ وقت گزاری کے لئے ہر بار استثنٰی کی درخواست دی جاتی ہے، پرویز مشرف نے سعودی عرب جانے کے لیے درخواست دی ہے، کراچی سے سعودی عرب کا 4 جبکہ کوئٹہ کے لئے ایک گھنٹے کاسفر ہے، وہ سعودی عرب جاسکتے ہیں تو یہاں کیوں نہیں آسکتے۔

سماعت کے دوران عدالت نے پرویز مشرف کے طبی معائنہ سے متعلق میڈیکل بورڈ کی عدم تشکیل پر برہمی کا اظہار کیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top